نواز شریف کا اصل وطن لندن، پاکستان اقتدار ، لوٹ مار کاٹھکانہ ہے:طاہر القادی

نواز شریف کا اصل وطن لندن، پاکستان اقتدار ، لوٹ مار کاٹھکانہ ہے:طاہر القادی

  

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے لندن سے لاہور پہنچنے پر ایئر پورٹ پر میڈیا سے خصوصی با ت چیت کرتے ہوئے کہا نواز شریف کا اصل کاروباری وطن لندن پاکستان ان کے اقتدار اور لوٹ مار کا ہیڈ کوارٹر ہے،ان کا جلد مواخذہ نہ کیا گیا تو یہ بیرونی طاقتوں سے مل کر پاکستان کے حالات خراب کر سکتے ہیں، اللہ نہ کرے پاکستان کیساتھ ایک ٹکڑا پنجاب کا بھی بچ جائے تو یہ اسے بھی پاکستان کا نام دینے کو تیار ہونگے، بالآخر قاتل اعلیٰ پنجاب بھی کک آؤٹ ہو گا، اصل تحقیقات کا آغاز اقتدار سے بے دخلی پر ہو گا ، یہ قاتل ڈاکو اور خائن ہیں کبھی قانون کا سامنا نہیں کر سکتے، احتساب عدالت نیب آرڈیننس سیکشن 16 کے تحت ایک ماہ کے اندر فیصلہ سنا نے کی پابند ہے، سپریم کورٹ نے 6 ماہ کی مدت دے کر نرمی برتی، باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ پبلک ہونے کی دیر ہے شہباز شریف سمیت ملو ث تمام وزراء ننگے ہو جائینگے، جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ کیلئے پنجاب حکومت کو 12ستمبر کا نوٹس دیا ہے ہم انصا ف کیلئے پرامید ہیں، شریف خاندان کیخلاف ریفرنسز کے حوالے سے نیب کو اپنی کریڈیبلٹی قائم کرنے کا موقع ملا ہے، نااہلیت کے پیچھے صر ف اقامہ کا مسئلہ نہیں ہے سارے ریفرنس کرپشن کے ہیں۔ میں نے ہمیشہ عید اپنے وطن پاکستان میں کی اور یہ عید کے موقع پر اپنے ملک لندن چلے جاتے ہیں، کرپٹ اشرافیہ کی دنیا کے پانچوں براعظموں میں بزنس ایمپائرز ہیں، نواز شریف جب وزیراعلیٰ پنجاب بنے تو اس وقت کرپشن لوٹ مار کے ذریعے گلوبل بزنس پر کام شروع ہوگیا تھا، میرا خیال ہے والیم ٹین میں کرپشن کے ایکسرے، سکریننگ اور ایم آر آئی سمیت سب کچھ موجود ہے ،ان کا گھناؤنا کردار بے نقاب ہو کر رہے گا۔ان کی دنیا میں جتنی پراپرٹی اور کاروبار ہیں شاید اتنا کاروبار کوئی ریاست بھی نہ کر سکے، سپریم کورٹ نے انہیں نااہل قرار دیا ہے، کسی چھوٹی سی بات پر اتنا بڑا فیصلہ نہیں آسکتا، سپریم کورٹ نے ساری تحقیقا ت ملاحظہ کی ہیں، سپریم کورٹ کے پانچ رکنی بنچ کے فیصلے کو سراہتا ہے، انہوں نے رول آف لاء پر عمل کرتے ہوئے ان کو پراپر چینل میں ڈا لا ہے، اب یہ بھاگ رہے ہیں،نیب نے تین نوٹس بھیجے کوئی پیش نہیں ہوا کیا کسی عام ملزم سے نیب یہی سلوک کرتا ہے؟ اشرافیہ کا اقتدار کمزو ر ہوا ہے تو انصاف کا راستہ کھلا ہے، تحقیقات اس وقت ہوتی ہیں جب ادارے غیر جانبدار ہوتے ہیں۔

طاہر القادری

مزید :

علاقائی -