امریکی پالیسی کے خلاف عوامی یکجہتی قابل ستائش ہے: علی قلی خان

امریکی پالیسی کے خلاف عوامی یکجہتی قابل ستائش ہے: علی قلی خان

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) ویٹرنز آف پاکستان کے صدر لیفٹننٹ جنرل(ر) علی قلی خان کی زیر صدارت مجلس عاملہ کے خصوصی اجلاس میں سی پی این ای ارکان کی خدمات کو سراہا گیا ہے۔ارکان نے جنوبی ایشیا کے لیے نئی امریکی پالیسی کے خلاف عوامی سطح پر اظہار یک جہتی اور کثیر تعداد میں ہونے والے مظاہروں کو قابل تحسین قرار دیا۔ بیان میں کہا گیا کہ امریکی قیادت کو اس بات کا ادراک ہونا چاہیے کہ اگر ڈالر کی صورت میں مالی امداد جتانے سے پہلے انہیں پاکستانی قوم کے عظیم جانی نقصان کا اعتراف کرنا چاہیے، کیوں کہ دنیا کی کوئی شے ان قربانیوں کا متبادل نہیں ہوسکتی۔ علاوہ ازیں دنیا کے متعدد ممالک میں قیام امن کے لیے اقوام متحدہ کی امن فوج میں پیش کی گئی خدمات ہمارا فخر ہے۔ افغانستان کے مسائل کا بہترین حل یہی ہے کہ وہاں اقوام متحدہ امن فوج کی زیر نگرانی نئے انتخابات کا انعقاد کیا جائے۔ اجلاس میں پچاس برس تک پاکستان سے جزام کا مرض ختم کرنے کے لیے عظیم خدمات انجام دینے والی جرمن ڈاکٹر رتھ فاؤ کے انتقال پر اظہار افسوس کیا گیا۔ ارکان نے ا ن کی آخری رسومات میں چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر باجوہ کی شرکت کو قابل تحسین قرار دیا۔ اجلاس میں کہا گیا کہ آرمی چیف کے اس اقدام سے پاک فوج میں اقلیتوں کے لیے پائے جانے والے احترام اور قدردانی کا اظہار ہوتا ہے۔ ماہ ستمبر میں پشاور چرچ پر ہونے والے سفاکانہ حملے کے چار برس مکمل ہوجائیں گے۔ اس حملے کے بعد سے ویٹرنز آف پاکستان ملک بھر کے گرجا گھروں میں تعینات سیکیورٹی گارڈز کے اخرجات برداشت کرتی ہے۔ اجلاس میں کہا گیا کہ وی او پی یہ عظیم خدمت جناب اکرام سہگل کی فراخ دلانہ معاونت کے طفیل ہی ادا کرپاتی ہے، جو اس سلسلے میں اپنی نجی سیکیورٹی کمپنی کی خدمات فراہم کرتے ہیں اور اس پر آنے والی تمام لاگت ادا کرتے ہیں۔ اس عظیم قومی مقصد سے ان کی لگن اور خلوص کو ملک کے اندر اور بیرن ملک بسنے والی مسیحی برادری اور ان کے عمائدین کی جانب سے سراہا جاتا ہے۔ اجلاس میں ارکان نے مختلف حلقوں کی جانب سے عدلیہ پر ہونے والے حملوں کی مزمت کی اور اس امید کا اظہار کیا گیا کہ مختلف گروہوں کے تحفظات کو دور کرنے کے لیے دانشمندی کے ساتھ آئین و قانون کے مطابق مسائل کا حل نکالا جائے گا۔

مزید :

عالمی منظر -