نیب نے میگا فراڈ میں ایل ڈی اے کے 3افسروں سمیت چار افراد کو گرفتار کر لیا

نیب نے میگا فراڈ میں ایل ڈی اے کے 3افسروں سمیت چار افراد کو گرفتار کر لیا

  

لاہور (خبرنگار) قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور نے لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی(ایل ڈی اے) میں کمرشلائزیشن کی مد میں ہونے والے میگا فراڈ میں ایل ڈی اے کے دو ڈپٹی ڈائریکٹروں، ایک اسسٹنٹ ڈائریکٹر اور انکے ساتھی کو لاہور کے مختلف علاقوں سے گرفتار کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق ڈپٹی ڈائریکٹر غلام اصغر ، ڈپٹی ڈائریکٹر محمد سلیم اور اسسٹنٹ ڈائریکٹر سید وقار باہمی ملی بھگت سے کمرشلائزیشن کی مد میں جمع ہونے والی رقوم کی بوگس رسیدیں بنوانے اور بھاری رقوم کا غبن کرتے ہوئے حکومتی خزانے کو 16کروڑ روپے کا نقصان پہنچانے کے مرتکب ٹھہرے۔ نیب لاہور کو ایل ڈی اے میں کرپشن کے حوالے سے ملزمان کے خلاف درخواست موصول ہوئی جس پر تحقیق کا آغاز کیا گیا ۔ 28اپریل2017کو ڈائریکٹر جنرل نیب لاہور شہزاد سلیم کی جانب سے درخواست کو ا نکوائری کے مراحل میں داخل کر دیا گیا۔ دورا ن انکوائری ملزمان کے خلاف ٹھوس شواہد حاصل ہونے پر ملزمان کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ہے۔ واضح رہے کہ جولائی2017میں مذکورہ کیس میں دو ملزمان کو نیب لاہور کی جانب سے گرفتار کیا گیا تھا جن سے تفتیش میں اہم انکشافات ہونے پر کارروائی کو آگے بڑھایا جا رہاہے۔نیب لاہور مذکورہ 4 ملزمان کو گرفتاری کے بعد احتساب عدالت میں آج صبح پیش کیا جائے گا اور جسمانی ریمانڈ حاصل کر کے تفتیش کا سلسلہ شروع کیا جائے گا۔ ڈی جی نیب شہزاد سلیم کے مطابق ملزمان کے خلاف ایل ڈی اے میں کمرشلائزیشن کی مد میں کروڑوں روپے کے میگا فراڈ کا الزام ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -