ٹیکنالوجی میں جدت لا کر 50فیصدپانی بچایاجاسکتاہے،ماہرین

ٹیکنالوجی میں جدت لا کر 50فیصدپانی بچایاجاسکتاہے،ماہرین

  

فیصل آباد(بیورورپورٹ)ٹیکنالوجی میں جدت لا کر ایک ہی مشینی آپریشن کے ذریعے پانی کی 50 فیصد تک بچت کو یقینی بنایاجاسکتاہے جبکہ اس اقدام سے مکئی ، کپاس ، چاول سمیت دیگر فصلات کی کھیلیاں بنا کر بیج کاشت کرتے ہوئے بہترین پیداواربھی حاصل کی جا سکتی ہے۔ماہرین زراعت نے کہاکہ پاکستان میں پانی کی بچت کیلئے دستیاب بیڈ ٹیکنالوجی میں جدت لاتے ہوئے مکئی، کپاس اور چاول سمیت دیگر فصلات کو ایک ہی مشینی آپریشن کے ذریعے کھیلیاں بنا کر بیج کاشت کرنے میں کامیابی حاصل کر کے پیداواری حجم میں اضافے کے ساتھ ساتھ 50فیصد پانی بچایا جا سکتا ہے۔انہوں نے کہاکہ دنیا کے مختلف ممالک میں موسمی تبدیلیوں اور بڑھتے ہوئے درجہ حرارت کی وجہ سے سب سے زیادہ زرعی شعبے کو دباؤ کا سامنا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بڑھتی ہوئی آبادی کی خوراک کی ضروریات پوری کرنے کیلئے عالمی سطح پر دستیاب پانی اور زمینی وسائل کے بہتر استعمال سے مثبت نتائج حاصل کئے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اصلاح آبپاشی تحقیقی مراکز میں گندم کی کھیلیوں پر کاشت کی کامیاب ٹیکنالوجی نے دیگر فصلات کیلئے راہیں کھول دی ہیں اور آنے والے دنوں میں اہم فصلات کی کھیلیوں پر کاشت یقینی بنائی جا سکے گی۔ انہوں نے کہا کہ دنیا میں کہیں بھی باغات میں ہل چلا کر بڑی فصلات اگانے کا رواج نہیں جبکہ پاکستان میں اس رجحان کی وجہ سے زرعی پیداوار میں کمی اور باغات کو بیماریوں کا سامنا ہے۔انہوں نے کہا کہ مشینی انقلاب نہ آنے کی وجہ سے پاکستان کے کسانوں کو کھیلیوں پر ہاتھوں سے مکئی، گندم اور چاول کاشت کرنا پڑتے ہیں جسے بیرون ممالک کی ٹیکنالوجی کے ذریعے ریورس انجینئرنگ کے عمل سے میکانکی انداز میں مکمل کیا جا سکتا ہے۔

fd/mzm/msb 1354

مزید :

کامرس -