کاشتکاروں کو 3ہزار روپے فی من کپاس کی قیمتیں دلوا رہے ہیں،محمدمحمود

کاشتکاروں کو 3ہزار روپے فی من کپاس کی قیمتیں دلوا رہے ہیں،محمدمحمود

  

لاہور(کامرس رپورٹر)سیکرٹری زراعت پنجاب محمد محمود نے کہا ہے کہ روئی کی قیمتیں بین الاقوامی منڈیوں میں بہت مستحکم ہیں صرف مقامی سطح پر کچھ وجوہات کی بنا پر کپاس کی قیمتوں میں عارضی کمی دیکھنے میں آرہی ہے جسے بہت قریب سے مانیٹر کیا جارہا ہے۔ عید کی چھٹیوں کے بعد مارکیٹ میں تیزی کے قوی امکانات ہیں اور حکومت پنجاب اپنے وعدے کے مطابق کاشتکاروں کو 3ہزار روپے فی من کے حساب سے قیمتیں دلوانے کیلئے تمام ممکنہ وسائل بروئے کار لارہی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ کپاس کے کاشتکار عید کے دنوں میں بھی پیسٹ مینجمنٹ، نیوٹریشن مینجمنٹ اور اریگیشن مینجمنٹ پر توجہ مرکوز رکھیں تاکہ زیادہ سے زیادہ فی ایکڑ پیداوار کے حصول کو یقینی بنایا جاسکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ زراعت کے افسران اور فیلڈ عملہ کو عید کی چھٹیوں کے دوران موبائل فون کھلے رکھنے کی ہدایات جاری کردی گئی ہیں تاکہ کپاس کے کاشتکاروں کو فصل کے بارے میں رہنمائی حاصل کرنے میں کسی قسم کی مشکلات پیش نہ آئیں۔ انہوں نے کہا کہ زرعی ادویات پر تمام ٹیکسز ختم کردئیے گئے ہیں اور زرعی مشینری پر بھی ٹیکس کی شرح 17 فیصد سے کم کرکے 5 فیصد کردی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کھادوں پر سبسڈی آئندہ بھی جاری رہے گی۔ حکومت پنجاب کے کسان دوست اقدامات کی بدولت فصلوں کی پیداواری لاگت میں خاطرخواہ کمی واقع ہوئی ہے اور اس کے نتائج فصلات کے سیکٹر میں 8 فیصد کی شرح سے اضافہ کی شکل میں برآمد ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب تیلدار اجناس کی کاشت کو فروغ دینے کیلئے 5 ہزار روپے سبسڈی فی ایکڑ کے حساب سے فراہم کرے گی تاکہ مضر صحت درآمدی پام آئل سے چھٹکارا حاصل کیا جاسکے اور خوردنی تیل کی درآمد پر خرچ ہونے والے کثیر زرمبادلہ میں خاطر خواہ کمی لائی جاسکے۔

مزید :

کامرس -