پرویز مشرف ،سانحہ کارساز میں شریک ملزم ہیں:جاوید ہاشمی

پرویز مشرف ،سانحہ کارساز میں شریک ملزم ہیں:جاوید ہاشمی

  

ملتان(نیوز رپورٹر)سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نیے کہا ہے کہ پرویز مشرف کا لندن میں ایک چینل کو دیا جانیوالا انٹرویو پاکستان کے ایٹمی پروگرام کیخلاف ایک خطرناک سازش کا پیش خیمہ ہے ۔بینظیر بھٹو کے مقدمہ کے فیصلہ سے آصف زرداری کس حد تک مطمئن ہیں نہیں معلوم لیکن میری دانست میں پرویز مشرف شہید بینظیر بھٹو کے سانحہ میں براہ راست ملوث ہیں پرویز مشرف پاکستان کے محسن ڈاکٹر عبدالقدیر کو امریکہ کے حوالے کرنے پر تلے ہوئے تھے اگر اس وقت کے وزیراعظم مہر ظفراللہ جمالی آڑے نہ آئے پرویز مشرف اور اس کے ساتھیوں نے محسن پاکستان کا جینا حرام کر رکھا تھا امریکہ اور اس کے حواریوں کو پاکستان کا ایٹمی پروگرام کسی صورت میں قبولی نہیں ضیاء الحق کے طیارہ حادثہ کے بعد جب محترمہ بینظیر بھٹو نے اقتدار سنبھالا تو امیریکن کو پھر ایک بار امید ہوئی کہ بینظیر بھٹو ایٹمی پروگرام کا سوئچ آف کردیں گی لیکن ان کی سوچ کے ہرعکس پاکستان کو میزائل ٹیکنالوجی سے لیس کردیا اور ایسا میزائل پروگرام کردیا کہ جس سے امریکہ سمیت تمام پاکستان مخالف قوتوں کی ٹانگیں کانپتی ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز پریس کلب ملتان میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ پرویز مشرف کی لندن میں بیٹھ کر جس وقت یہ انٹرویو دیا ہے اس کی ٹائمنگ خطرناک ہے کیونکہ جب سے پاکستان دنیا میں ایٹمی قوت کے طور پر سرخرو ہوا ہے اس وقت سے امریکہ اور بھارت مل کر پاکستان کے پرامن پروگرام پر شب خون مارنے کی تاک میں لگے ہوئے ہیں جس طرح اسامہ بن لادن پر شب خون مارا گیا تھا انہوں نے کہا کہ پاکستان کی سلامتی کیلئے ہمارا ایٹمی پروگرام لازم وملزوم ہے اور امریکہ اور اس کے حواریوں کیلئے ایٹمی پروگرام تک رسائی محال ہے لیکن قوم اور افواج پاکستان ہوشیار رہے مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ پرویز مشرف نے محترمہ بینظیر بھٹو کوواضح طور پر پاکستان آنے سے روک دیا تھا اور یہ بھی دو ٹوک الفاظ میں کہہ دیا تھا کہ اگر وہ پاکستان آئیں تو وہ سیکورٹی نہیں دیں گے اور پھر قوم نے دیکھا کہ مشرف نے انہیں سیکورٹی فراہم نہ کی اور سانحہ رونما ہوگیا پرویز مشرف اس سانحہ میں شریک ملزم ہیں۔انہوں نے کہا کہ 2003ء میں سعودی سفیر کی جانب سے اسلام آباد کے ہوٹل میں ایک افطار پارٹی کے دوران جس میں سید مشاہد حسین،ایڈمرل عبدالعزیز کی موجودگی میں ڈاکٹر عبدالقدیر پر خود ہر ہونیوالی زیادتیوں پر ان کی آنکھیں چھلک پڑیں اور کہا کہ م شرف اور اس کے آفیسرز کی دھمکیوں نے زندگی تنگ کرکے رکھ دی ہے انہوں نے کہا کہ بھارت نے عبدالکلام کو ملک کا صدر بنادیا جبکہ ہم نے اپنے محسن کی زندگی تنگ کرکے رکھ دی مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ پاکستان کا ایٹمی پروگرام بھٹو کے دور میں شروع ہوا لیکن ان کے بعد میں آنیوالی لیڈرشپ نے اس پروگرام پر کمپرومائز نہیں کیا اور خاموشی سے ایٹمی پروگرام اپنے مراحل طے کرتا رہا ہے جبکہ فوج میں ایک گروہ دھماکوں کے حق میں نہیں تھا ان کا خدشہ تھا کہ دھماکوں کے ردعمل میں پاکستانی معیشت پر منفی اثرات مرتب ہوسکتے ہیں دھماکوں کو روکنے کیلئے آرمی چیف جہانگیر کرامت پر دباؤ ڈالا گیا لیکن نواز شریف نے انکار کردیااور 1998ء میں پاکستان نے دھماکے کردیئے اس وقت سے محسن پاکستان کی توہین کی جارہی تھی انہوں نے کہا کہ پاکستان کیلئے مشکلات بڑھ رہی ہیں امریکی صدر کے بیان کے بعد مشرف کا انٹرویو تباہ کن ہے قوم بیدار ہوجائے آج پاکستان کو پھر لاوارث کردیا گیا ہے پاکستانی قوم امریکہ اور بھارت کے عزائم کی تکمیل کبھی نہیں ہونے دیگی امریکہ کا فوکس پاکستان کا ایٹمی پروگرام ہے پاکستان کی افواج سے کہوں گا کہ پرویز مشرف کو گرفتار کرکے پاکستان لایا جائے مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ پاکستان کا ایٹمی پروگرام مخالفین کی دسترس سے باہر ہے جبکہ امریکہ ،بھارت ،یورپ اور اسرائیل پاکستانی میزائلوں کی دسترس میں ہیں۔

جاوید ہاشمی

مزید :

کراچی صفحہ اول -