خورشید عمرزئی کی پے رول پررہائی انصاف کا قتل ہے‘ خلیل عمرزئی

خورشید عمرزئی کی پے رول پررہائی انصاف کا قتل ہے‘ خلیل عمرزئی

  

چارسدہ (بیورو رپورٹ)قتل ، اقدام قتل اور دہشت گردی کے مقدمہ میں گرفتار ملزم ایم پی اے ارشد عمر زئی کے بھائی خور شید عمر زئی کی پے رول پر رہائی قانون و انصاف کا قتل ہے ۔ والدہ کی بیماری کے بہانے بااثر ملزم خورشید کو سیاسی اثر و رسوح کی بناء پر ہوم سیکرٹری نے پے رول پر رہا کر کے قانون اور انصاف کی دھجیاں اڑا دی ۔ کسی جنازے میں ملزم کی پے رول پر رہائی دیکھی ہے مگر والدہ کی بیماری پر پے رول پر رہائی پہلی بار دیکھنے کو ملی ہے ۔ تحصیل ناظم خلیل بشیر خان عمر زئی ۔ تفصیلات کے مطابق عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماء اور تحصیل ناظم خلیل بشیر خان عمر زئی نے میڈیا سے بات چیت کر تے ہوئے کہا کہ خیبر پختونخوا کے ہوم سیکرٹری نے قتل ، اقدام قتل اور دہشت گردی کے مقدمہ میں گرفتار بااثر ملزم خور شید خان عمر زئی کی چار سال بعد گرفتاری اور ہوم سیکرٹری کی طر ف سے پے رول پر رہائی کو قانون و انصاف کا کھلا مذاق قرار دیتے ہوئے سپریم کورٹ اور پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس صاحبان سے اس حوالے سے سوموٹو ایکشن لینے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہاکہ ہوم سیکرٹری نے ملزم خور شید خان عمر زئی کووالدہ کی بیماری کا عذر پیش کرنے پر پے رول پر رہا کیا ہے جو کسی مذاق سے کم نہیں۔انہوں نے کہاکہ ہوم سیکرٹری کے اس فیصلے سے خیبر پختونخوا کے جیلوں میں موجود ہر قیدی کو حق حاصل ہوا ہے کہ بہن بھائی اور والدہ کی بیماری کا عذر پیش کرکے رہائی حاصل کریں۔ ملزم خور شید خا ن عمر زئی قتل ، اقدام قتل اور دہشت گردی کے مقدمات میں چار سال مفرور تھے اور گرفتاری کے بعد عدالت پر سیاسی دباؤ کی وجہ سے ملزم کو جوڈیشل ریمانڈ بھی نہیں دی گئی بلکہ ان کو سیدھا جیل بھیج دیا گیا مگر جیل کی بجائے ملز م کو ہسپتال انتظامیہ کی ملی بھگت سے میڈیکل گراؤنڈ پر ہسپتال کے پرائیوٹ روم میں داخل کیا گیا مگر میڈیکل رپورٹ کلےئر ہونے کے بعد ملزم کو ہسپتال سے ڈسچار ج کیا گیا جس پر ملزم کے بھائی ارشد خان عمر زئی نے ایم ایس ڈی ایچ کیو ہسپتال چارسدہ کی بے عزتی کی ۔ انہوں نے مزید کہاکہ چارسدہ کے سیشن کورٹس سے ہمیں انصاف کی توقع نہیں اس لئے ہم نے چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ کو مقدمہ کسی اور ضلع بھیجنے کی در خواست کی جس پر ہائی کورٹ نے ہماری درخواست منظور کر لی ہے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -