آزاد کشمیر سپریم کورٹ میں تعلیمی پیکج توہین عدالت کیس کی سماعت

آزاد کشمیر سپریم کورٹ میں تعلیمی پیکج توہین عدالت کیس کی سماعت

  

مظفرآباد (بیورورپورٹ)آزادجموں وکشمیر سپریم کورٹ میں تعلیمی پیکج توہین عدالت کیس کی سماعت ،حکومت نے تعلیمی پیکیج بحال کرنے کا نوٹیفکیشن عدالت میں پیش کر دیا ،کیس کی سماعت چیف جسٹس عدالت عظمی جسٹس محمد ابراہیم ضیاء نے کی ،عدالت نے توہین عدالت کیس کی سماعت شروع کی تو حکومتی وکیل راجہ محمد حنیف خان ایڈووکیٹ نے وقت مانگا جس پر عدالت نے فریقین کو وقت دے دیا ،گیارہ بجے کیس کی سماعت دوبارہ شروع ہوئی جس پر محکمہ تعلیم نے پیکیج بحالی کا نوٹیفکیشن عدالت میں پیش کر دیا، نوٹیفکیشن نمبر 8215-27مورخہ 31اگست 2017ء کے ضمن میں حکومتی وکیل نے موقف اختیار کیاکہ قبل ازیں جاری شدہ نوٹیفکیشن نمبر 110-36-47مورخہ 21-10-216 جس کے تحت تعلیمی پیکج ختم کیا گیا کو منسوخ کیا جاتا ہے ،نوٹیفکیشن کے تحت تعلیمی پیکج برائے نظر ثانی اسمبلی میں پیش ہو گا ،علاوہ ازیں نظامت اعلیٰ کالجز کے مکتوب 10608-09مورخہ 26-07-2017جس میں اپ گریڈ تعلیمی اداروں میں تعینات پروفیسرز کو اپنی اصل اسامیوں پر بحال کرتے ہوئے عمل درآمد یقینی بنانے کا کہا گیا تھا کو بھی منسوخ کرتے ہوئے پہلے کی پوزیشن پر بحال کیا جاتا ہے اور مکتوب لکھنے پر ناظم اعلیٰ تعلیم کالجز (وقت) انجم افشاں نقوی کے خلاف بھی کارروائی کا کہا گیا ہے۔،حکومت نے عدالت میں نوٹیفکیشن نمبر 110-36-47مورخہ 21-10-216کو سہواً جاری کرنے کا اقرار بھی کیا ،توہین عدالت کیس کی سماعت میں چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ سیکرٹری تعلیم سکولز اور سیکرٹری ہائیر ایجوکیشن کے خلاف توہین عدالت بنتی ہے ،عدالت نے دونوں کو تین لاکھ ضمانتی مچلکے جمع کروانے کی ہدایت کی بصورت دیگر جیل جانا پڑے گا ،عدالت نے قرار دیا ہے کہ تعلیمی پیکج کے تحت اپ گریڈ تعلیمی اداروں میں تعینات اساتذہ کو کسی صورت ڈسٹرب نہ کیا جائے اور طلبہ کوسہولیات مہیا کرنے کے لیے تمام اقدامات کیے جائیں اور اداروں کو تحت قواعد چلایا جائے ۔عدالت میں شمارہ نمبر 6سے 8تک کے فریقین اصالتاً طلب تھے ،کیس کی آئندہ سماعت کے لیے چیف جسٹس محمد ابراہیم ضیاء اور سینئر جج راجہ سعید اکرم خان پر مشتمل ڈویژن بینچ تشکیل دے دیا گیا ،اس کیس میں حکومت کی جانب سے راجہ محمد حنیف خان ایڈووکیٹ پیش ہوئے جب کہ سردار عبدالحمید خان ،بیرسٹر ہمایوں نواز نے درخواست گزاران کی جانب سے پیروی کی ۔کیس کی آئندہ سماعت 18ستمبر کو ہو گی ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -