عید قربان کل مذہبی جوش و خروش سے منائی جائے گی

عید قربان کل مذہبی جوش و خروش سے منائی جائے گی

  

ملتان (سٹی رپورٹر ‘ کرائم رپورٹر ‘ سپیشل رپورٹر ) ملک بھر میں عید الاضحی کل بروز ہفتہ کو مذہبی جوش و خروش سے منائی جائے گی۔ نماز عید کی (بقیہ نمبر47صفحہ12پر )

ادائیگی کے بعد فرزندان اسلام جانوروں کی قربانی کر کے سنت ابراہیمی کو زندہ کریں گے۔ دیگر شہروں کی طرح ملتان میں بھی سینکڑوں مقامات پر عید کے اجتماعات ہوں گے۔ اس موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے جائیں گے جس کے لئے پولیس کے ہزاروں اہلکار اپنی ڈیوٹی سرانجام دیں گے۔ ملتان میں نماز عید کے بڑے بڑے اجتماعات شاہی عید گاہ خانیوال روڈ، ابدالی مسجد، مرکز فیضان مدینہ شاہ رکن عالم کالونی، جامع مسجد درگاہ بہاء4 الدین زکریا ملتانی ، جامع مسجد درگاہ شاہ رکن عالم ، جامع مسجد خیر المدارس اورنگزیب روڈ، دربار سخی سلطان علی اکبر، امام بارگاہ شاہ یوسف گردیز، دربار حضرت شاہ شمس، قدیمی مسجد ممتاز آد، مسجد الحسین نیو ملتان، حیدریہ مسجد گلگشت، مرکز سعد بن ابی وقاص چوک کچہری، جامع العلوم معصوم شاہ روڈ ملتان، جامع مسجد انوار العلوم نیو ملتان اور دیگر مقامات پر منعقد ہوں گے۔ ضلعی انتظامیہ نے کھلے مقامات پر عید اجتماعات پر پابندی عائد کر دی۔ پابندی کا فیصلہ ممکنہ تخریب کاری کے باعث کیا گیا ہے۔ اس سلسلہ میں گزشتہ روز ضلعی امن کمیٹی کے اجلاس میں علماء4 کرام کو بھی آگاہ کیا گیا۔ ضلعی انتظامیہ کے مطابق نماز عید کا ااجتماع چار دیواری کے اندر کیا جا سکے گا۔ دریں اثناء شہر اور نواحی علاقوں میں قصابوں نے عید سے قبل ہی اپنی دوکانیں بند کردی تاہم بعض قصابوں نے جانور ذبح کرنے کیلئے اپنی دکانیں کھلی رکھی ہوئی ہیں جہاں پر جانور ذبح کرنے کیلئے بکنگ کا سلسلہ جاری ہے جبکہ موسمی قصاب بھی میدان عمل میں آگئے ہیں اور انہوں نے بھی لوگوں سے عید کے پہلے روز قربانی کرنے کیلئے بکنگ کا سلسلہ شروع کردیا ہے قصابوں کے ریٹ سن کر لوگوں کی بڑی تعداد قربانی کے پہلے دن کی نسبت دوسرے دن قربانی کرنے کو ترجیح دے رہی ہے ۔ بکرے کی قربانی کا ریٹ3ہزارسے5ہزار‘ گائے کی قربانی 8ہزار سے12ہزار جبکہ اونٹ کی قربانی کے لئے قصائیوں نے 20ہزارسے30ہزار روپے تک بکنگ کرنا شروع کردی ہے ۔موسمی قصابوں نے بھی ہزار‘ پانچ سو کم ریٹ لگا کر قربانی کرنے والوں کو پھانسنا شروع کردیا ہے۔ دریں اثناء سٹی پولیس آفیسر ملتان محمد سلیم کی ہدایت پر ملتان پولیس نے عید الاضحی کے حوالہ سے اپنے سیکیورٹی پروگرام کو حتمی شکل دے دی ہے۔اس بارے معلوم ہوا ہے کہ کل 849 مقامات میں سے 147کو ''اے''کیٹگری،558کو ''بی ''کیٹگری اور 144عبادت گاہوں کو ''سی ''کیٹگری میں شامل کیا گیا ہے۔اسی طرح 849 مقامات کی سیکیورٹی کیلئے2ایس پیز کی قیادت میں11ڈی ایس پی صاحبان،33انسپکٹرز،308سے زائد سب انسپکٹر اور اسسٹنٹ سب انسپکٹرز،1486کانسٹیبلان عید ڈیوٹی سرانجام دیں گے۔ اس کے علاوہ ضلع ملتان میں 7 تفریحی مقامات پر 253 پولیس افسران و ملازمان ڈیوٹی سر انجام دیں گے۔ عید کے موقع پر کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے نمٹنے کیلئے عید کے اجتماعات کے موقع آنے جانے والوں کی جامع تلاشی کیلئے تما م اقدمات کو یقینی بنایا گیا ہے۔ عید کے موقع پر ون ویلنگ پر سختی سے پابندی عائد کی گئی ہے۔ دریں اثناء عیدالاضحی کی آمد کے ساتھ ہی اشیاء خوردونوش کی اشیاء میں 2سو فیصد کا اضافہ، عوام کی چیخیں نکل گئیں۔کھانے پینے کی تمام اشیاء مہنگی ہونا شروع ہوگئیں خصوصاً سبزیوں‘ مصالحہ جات اور دیگر اشیاء کی قیمتیں کئی گنا بڑھ گئی ہیں ۔چند رو ز قبل 20روپے کلو فروخت ہونے والا پیازہ80روپے‘40روپے کلو والا ٹماٹر100روپے‘ 120روپے کلو فروخت ہونے والی ادرک250‘20روپے والا آلو 60روپے کلو تک پہنچ گیا ہے ۔ دوسری طرف چکن اور گوشت کی قیمتوں میں نمایاں کمی آئی ہے ۔مصالحہ جات ،گھی ،چینی ،دالیں ،سبزیاں ،پھل اور دیگر اشیاء کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ہو نے سے مڈل کلاس طبقہ بری طرح سے متاثر ہو کر رہ گیا بازاروں میں خریداری کے لیے جانیو الے شہری اشیاء ضروریہ کی قیمتوں کا سن کر حواس باختہ ہو کر رہ گئے۔ ایک طر ف مرغی 118روپے کلو دوسری جانب ٹماٹر1سو روپے کلو ، عوام کے لئے سبزی گوشت پکانا بھی ناممکن ہوگیا ہے ۔ اورعید الاضحی پر مٹھائی کی مانگ بڑھنے کی وجہ سے بیکری مالکان نے مٹھائیوں کی تیاری ایک ہفتہ قبل سے ہی شروع کررکھی ہے ۔ شہریوں کی جانب سے مٹھائیوں کے تحفے دےئے جانے کے باعث قیمتوں میں ہوشربااضافہ اور معیار میں بھی کمی کردی گئی ہے۔ شہر کے مختلف علاقوں میں مضر صحت‘ غیر معیار یور ملاوٹ شدہ اشیاء سے مٹھائیاں ‘کیک اور دیگر بیکری آئٹمز تیار کئے جارہے ہیں ۔ سرکاری چھٹیوں کا آغاز ہوتے ہی گھروں کو واپس جانے کے لئے ریلوے سٹیشنوں‘ بس اڈوں پر پردیسیوں کا رش لگ گیا ‘رش میں غیر معمولی اضافہ دیکھتے ہوئے ریلوے انتظامیہ نے مسافروں کی سہولت کے لئے سپیشل ٹرینوں کا آغاز بھی کردیا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -