ملتان میں دوسرے روز بھی طوفانی بارش، چھتیں گرنے سے ماں بیٹا جاں بحق

ملتان میں دوسرے روز بھی طوفانی بارش، چھتیں گرنے سے ماں بیٹا جاں بحق

  

ملتان،کبیروالا،کوٹ ادو،عبدالحکیم،کہروڑ پکا،وہاڑی (کرائم رپورٹر،سپیشل رپورٹر،نمائندہ خصوصی،سٹاف رپورٹر،نمائندگان)ملتان سمیت جنوبی پنجاب میں بارشوں کا سلسلہ دوسرے روز بھی جاری رہا۔طوفانی بارش کے دوران دکانوں کی چھتیں گرنے سے ماں بیٹا جاں بحق جبکہ 11افراز زخمی ہوگئے۔بارش کے نتیجہ میں ملتان کے شہری علاقے پانی میں ڈوبنے لگے اور واسا کے ایمرجنسی پلان کی دھجیاں اڑگئیں۔بجلی کانظام درہم برہم ہوکررہ گیا ۔تفصیل کے مطابق معلوم ہوا ہے کہ گزشتہ رو ز تیز بارش سے ملتان کے مختلف علاقوں میں مکانوں کی چھتیں گرنے کے واقعات پیش آئے۔اس دوران بستی منجھ بہاولپور پور بائی پاس کے قریب راشد کے مکان کی چھت گر گئی،جس کے نتیجے میں اہل خانہ ملبے تلے دب گئے۔اہل علاقہ کی اطلاع پر ریسکیو کی چار گاڑیاں موقع پر پہنچ گئیں اور آدھے گھنٹے کے آپریشن کے بعد ملبہ ہٹا لیا گیا۔ملبے تلے دب کر راشد کی بیوی شہلہ ا ور ایک سالہ بیٹا فیضان جاں بحق ہوگئے،جبکہ 9سالہ مدیحہ،15سالہ عائشہ اور 20سالہ سمیرا کو نشتر منتقل کردیا گیا۔دریں اثناء لکڑ منڈی،وہاڑی روڈ اور مچھلی منڈی کے قریب مکانات کی چھتیں گرنے سے 6افراد زخمی ہوگئے،جنھیں ریسکیو عملہ نے موقع پر پہنچ کر نشتر منتقل کردیا۔ گزشتہ روز پیراں غائب روڈ پر واقع خضر کے مکان کی چھت گر گئی جس کے نیچے اس کے اہل خانہ دب گئے اہل علاقہ کی اطلاع پر ریسکیو ایمرجنسی ٹیم موقع پر پہنچ گئی اور ایک گھنٹے کے آپریشن کے بعد زخمیوں کو نکال لیا گیا۔زخمیوں میں35سالہ خضر اس کی 25سالہ بیوی میمونہ3سالہ بیٹا شرجیل6سالہ بیٹا جلیل اور بھابھی طلعت شامل ہیں۔زخمیوں کو نشتر ہسپتا ل منتقل کردیا گیا ہے۔ملتان کے مضافاتی علاقوں میں 42جبکہ شہری علاقوں میں ہونے والی 66ملی میٹر بارش نے ضلعی انتظامیہ کے ایمرجنسی پلا ن کا پول کھول کے رکھ دیاہے ۔پہلے علی الصبح اور بعد ازاں دن کے وقت ایک گھنٹہ تک ہونے والی موسلا دھار بارش کے نتیجہ میں ملتان شہر کی اہم شاہراوں سمیت سٹرکیں ،گلیاں ،اہم نجی و سرکاری عمارتوں سمیت نشبی علاقے زیر آب آگئے اور سٹرکیں و گلیاں ندی نالوں کا منظر پیش کرنے لگیں ۔راستے بند ہونے سے شہری گھروں اور کاروباری مراکز میں محصور ہوکر رہ گئے جبکہ ضلعی انتظامیہ کے افسران جن میں کمشنر ،ڈپٹی کمشنر ملتان سمیت دیگر انتظامی افسران اپنے دفاتر میں بیٹھے شہریوں کی بے بسی کا تماشہ دیکھتے رہے اور واسا کے علاوہ میئر ملتان،کمشنر و ڈپٹی کمشنر ملتان سمیت کوئی بھی انتظامی افسر اپنے دفتر سے باہر نہ نکلا ۔اس ضمن میں محکمہ موسمیات نے آئندہ چوبیس گھنٹوں میں مزید بارشوں کی پیشگوئی کی ہے ۔گزشتہ روز ہونیوالی بارش نے واسا کی کارکردگی کو بے نقاب کردیا ‘ بارش کیوجہ سے ضلع کچہری ‘ ایم ڈی اے چوک ‘ کلمہ چوک ‘ حضوری باغ روڈ ‘ 9 نمبر چونگی ‘ گلگشت ‘ گورنمنٹ ایمپلائز کالونی ‘ شاہین مارکیٹ ‘ ایل ایم کیو روڈ پانی سے بھر گئے ۔ نکاسی آب نہ ہونے کیوجہ سے پانی مرکزی سڑکوں اور گلیوں میں جمع ہوگیا جس کیوجہ سے کاریں ‘ موٹر سائیکل ‘ رکشہ تک پانی میں پھنس کر رہ گئے ۔ تبایا گیا ہے بارش کیوجہ سے شاہین مارکیٹ میں بہت زیادہ پانی جمع ‘ واسا ٹیمیں تمام تر کوشش کے باوجود شہریوں کو ریلیف فراہم کرنے میں ناکام رہیں ‘ گزشتہ روز ہونیوالی بارش سے ڈپٹی کمشنر آفس اور تحصیل باغ لانگے کے احاطہ میں پانی جمع ہوگیا‘ واسا ٹیمیں ان دفاتر سے بروقت پانی نکالنے میں ناکام رہیں ‘ جس سے سائلین کو دفاتر تک پہنچنے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑا ‘ بارشی پانی کیوجہ سے حضوری باغ روڈ بری طرح متاثر ہوئے ‘ شاہین مارکیٹ کی طرح حضوری باغ روڈ پر گٹر ابل پڑے ‘ جس سے سڑکیں جل تھل ہوگئیں ‘ وہاڑی روڈ ‘ رائٹر کالونی ‘ شمس آباد ‘ رشید آباد ‘ طارق روڈ ‘ ہائیکورٹ روڈ ہمیشہ کی طرح رات گئے جل تھل رہے جس سے گٹروں کاپانی گلیوں میں جمع ہوگیا ‘ ارد گرد کی کالونی کے رہائشی بھی گھروں میں بند ہو کر رہ گئے ۔ واسا افسران اور اہلکار صرف سرکاری دفاتر اور انکے ارد گرد کے علاقوں پر توجہ دیتے ہیں ‘ شہریوں کی کالز سے تنگ آکر واسا شکایات سیل کے اہلکاروں نے فون سننا بند کر دیا جس سے شہریوں کی پریشانی میں مزید اضافہ ہوگیا ‘ واسا کے مین ڈسپوزل اسٹیشن بجلی کی ٹرپنگ کیوجہ سے پوری طرح فعال نہیں رہے جس سے واسا افسران اور اہلکاروں کو دشواری کا سامنا کرنا پڑا ۔ملتان شہر میں مسلسل دوسرے روز طوفانی بارش کے باعث بجلی کی فراہمی تعطل کا شکار رہی ۔ درجنوں فیڈر ٹرپ کر گئے ۔ انفرادی شکایات میں غیر معمولی اضافہ ہوا ۔ کئی علاقوں میں رات گئے تک بجلی بحال نہیں ہوئی ۔میپکو کے سب ڈویژنل افسران اور لائن سپرنٹنڈنٹس کے مطابق سٹاف کی شدید کمی ہے ۔ 5ہزار اور اس سے زائد کنکشنوں پر صرف ایک لائن مین اور ایک اسسٹنٹ لائن مین ہے ۔ اس صورتحال میں بجلی کی بحالی کے کاموں میں شدید مشکلات درپیش ہوتی ہیں ۔کبیروالا سے نامہ نگار کے مطابق ملک کے دوسرے حصوں کی طرح کبیروالا اور اسکے نواحی علا قوں بھی گزشتہ تین روز سے شروع ہو نے والا با رشوں کا سلسلہ گزشتہ روز بھی جاری رہا، تین مقکان منہدم ہو گئے ،جانی نقصان سے محفوظ، دو روز سے جا ری با رشوں کے دوران نکا سی آب سسٹم بری طرح ناکام رہا نکا سی آب سسٹم نہ ہو نے کی وجہ سے شہر کے بیشتر رہا ئشی اور تجا رتی مرا کز خصوصاََ مین با زا ر،مخدوم پور روڈ ، محلہ اسلام آباد بستی غریب آبا د ،بستی حسین آبا د میں بازاروں اور گلیوں میں پا نی کھڑا رہا جس سے علا قہ مکینوں کو شدیدمشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے مزید بر آں با رشوں کے با عث شہر اور ملحقہ آبا دیوں میں بجلی کی ترسیل بھی بری طرح متا ثر ہو رہی ہے با رشوں کے باعث بستی غریب آبا د ،بستی حسین آبا د میں دو مکانوں ن کی چھتیں گر گئیں تاہم مکین معجزا نہ طور محفوظ رہے۔کوٹ ادو تحصیل رپورٹر اور نمائندہ پاکستان کے مطابق کوٹ ادو وگردونواح میں گزشتہ2 روز سیشروع ہونے والی بارش کا سلسلہ تا حال وقفے وقفے سے جاری ہے جسکی وجہ سے موسم خوشگوار ہو گیا ہے ،بارش سے بجلی وٹیلی فون کا نظام بھی کئی علاقوں میں معطل ہوگیا جبکہ گلیوں اور سڑکات پر پانی بھر جانے سے بارش کا پانی لوگوں کے گھروں اور دوکانوں میں داخل ہو گیا جسکی وجہ سے لوگوں کو آنے جانے میں شدید دشواری کا سامنا رہا،بارش کا سلسلہ تاحال وقفے وقفے سے جاری ہے۔عبدالحکیم سے سٹی رپورٹر،نمائندہ پاکستان کے مطابق عبدالحکیم و مضافاتی علاقہ جات میں امروز و گزشتہ روز کی بارش کے سبب بھادوں کی کڑاکے دارگرمی کا زور ٹوٹ گیا ہے درخت پودے سرسبز و شاداب ہوگئے اورمرجھائے پھول و چہرے کھل اٹھے ہیں۔کہروڑ پکا سے سٹی رپورٹر کے مطابق ملک بھر کی طرح کہروڑپکا میں بھی آخر کار باران رحمت ہوگیا جس کی وجہ سے گرمی اور حبس کا زور ٹوٹ گیا اور موسم خوشگوار ہوگیا۔وہاڑی سے بیورورپورٹ اورنامہ نگار کے مطابق حالیہ بارشوں کے سلسلہ کی پہلی بارش نے شہر او رگردونواح میں موسم خوشگوار کردیا ۔لوگوں نے خوشگوار موسم پر خوشی کااظہار کیا نوجوان اور منچلے لڑکوں نے موٹر سائیکلوں پر شہر کا چکر لگا کر خوشی منا ئی ۔

مزید :

ملتان صفحہ اول -