سیاست اور دفاع دباؤ کا شکار ، امید ہے پی پی اپنا صدارتی امید وار دستبرار کرے گی : فضل الرحمن

سیاست اور دفاع دباؤ کا شکار ، امید ہے پی پی اپنا صدارتی امید وار دستبرار کرے ...

  

کوئٹہ (آئی این پی) جمعیت علماء اسلام(ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ملک میں ابھی تک آزادی کے آثار نظر نہیں آرہے، ہماری معیشت، سیاست اور دفاع دباؤ کا شکار ہے، ہم پر لازم ہے کہ ہم آزادی کیلئے بہترین پیش رفت کریں، پاکستان میں جمہوری دارے مستحکم ہونے چاہئیں، امید ہے پیپلز پارٹی اپنا امیدوار دستبردار کرے گی۔ جمعہ کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے مزید کہا کہ پاکستان کو بنے 70سال سے زیادہ عرصہ ہو چکا ہے، ابھی تک آزادی کے آثار نظر نہیں آرہے، ہماری سیاسی معیشت اور دفاع دباؤ کا شکار ہے، ہم پر لازم ہے کہ ہم آزادی کیلئے بہترین پیشرفت کریں، ضرور ی نہیں کہ ہم اپنی جدوجہد میں کامیاب ہو سکیں، ہمیں اس کیلئے پیش رفت کرنا ہو گی، ہمیں ہر قسم کے دباؤ سے وطن عظیم کو آزاد کرانا ہے، میں محمود خان اچکزئی اور ان کے ساتھیوں کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ وہ اس معرکہ میں ہمارا بہت بڑا سہارا بنے ہوئے ہیں، منصب مل جاتے ہیں منزل ملنا ضروری ہوتی ہے۔

فضل الرحمن

کوئٹہ (مانیٹر نگ ڈیسک) پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ عمران خان وزیراعظم ہیں اور مولانا فضل الرحمان صدر ہوں تو یہ اصل تبدیلی ہو گی۔مولانا فضل الرحمان کے ہمراہ بات کرتے ہوئے محمود خان اچکزئی کا کہنا تھا کہ کتنا مزہ آئے گا کہ عمران خان وزیراعظم ہوں گے اور فضل الرحمان صدر ہوں، یہ اصل تبدیلی ہوگی۔ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ بہترین تبدیلی ہو گی، توازن بھی رہے گا اور تبدیلی بھی آ جائے گی۔انہوں نے کہا کہ دونوں ایک چپوترے پر کھڑے ہو کر پاکستان کے لیے سلامی لے رہے ہوں تو کتنا اچھا ہو گا۔محمود خان اچکزئی نے کہا کہ پشتو میں کہاوت ہے کہ گرم اور ٹھنڈی تاریں آپس میں ملتی ہیں تو بجلی روشنی دیتی ہے، انہوں نے عمران خان اور مولانا فضل الرحمان کا نام لیے بغیر کہا کہ گرم تار میرا یار، ٹھنڈا تار میرا یار، ان دونوں کو لگا دیجیے پاکستان روشن ہو جائے گا۔محمود خان اچکزئی کے ان جملوں سے ساتھ بیٹھے مولانا فضل الرحمان بھی مسکراتے رہے۔

مزید :

صفحہ آخر -