پانی کی قلت دور نہ ہوئی تو چند سال بعد ہمیں خانہ جنگی کا سامنا ہو گا : چیئر مین واپڈا

پانی کی قلت دور نہ ہوئی تو چند سال بعد ہمیں خانہ جنگی کا سامنا ہو گا : چیئر مین ...

  

گجرات (بیورورپورٹ) چےئرمین واپڈا لیفٹیننٹ جنرل (ر) مزمل حسین نے کہا کہ پانی کی قلت دور کرنے کے لیے پختہ سیاسی عزم کے ساتھ گورننس کو بہتر بنانا ہوگا،پانی کی قلت دور نہ ہوئی تو 10 سے 15 سال بعد خانہ جنگی کی کیفیت کا سامنا ہوگا وہ فیڈریشن آف پاکستان چیمبر زآف کامرس اینڈ انڈسٹری میں پاکستان میں پانی کی قلت کے عنوان سے راؤنڈ ٹیبل کانفرنس کے شرکا سے خطاب(بقیہ 41نمبرصفحہ7پر )

کر رہے تھے انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ڈیموں کی مخالف لابی سرگرم ہے جو ڈونر اداروں پر بھی اثر انداز ہوتی ہے،پانی کوذخیرہ کرنے کی گنجائش بڑھانے کے لیے کالا باغ سمیت دیگر تمام مجوزہ ڈیموں کی تعمیر ناگزیر ہے انہوں نے کہا کہ واپڈا کے پاس آبی اور توانائی پراجیکٹس مکمل کرنے کی بھرپور صلاحیت ہے،چھوٹے چھوٹے منصوبوں کے لیے سرخ فیتوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے،پلاننگ کمیشن سیاسی مقاصد کے پراجیکٹ کی منظوری دیتا ہے، پلاننگ کمیشن اپنی استعداد سے زیادہ پراجیکٹس پر کام کرتا ہے جو کئی سال کی تاخیر کا شکار ہوتے ہیں ایف پی سی سی آئی کے نائب صدروریجنل چےئرمین چوہدری عرفان یوسف نے کہاکہ پاکستان کا شمار دنیا کے ان ممالک میں ہوتا ہے جن کو پانی کی قلت جیسے مسائل درپیش ہیں مختلف ریسرچزکے مطابق 2025تک پاکستان کو پانی کی شدید قلت کا سامنا ہو گاتبدیل ہوتا موسم،پانی کا بے جا استعمال ،کدائی کے غیر مناسب طریقے،پانی کو دوبارہ استعمال کے قابل بنانے کے لیے ٹیکنالوجی کا فقدان اور ڈیمز کا نا بننا انتہائی تشویشناک ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -