100دن میں صوبہ ورنہ تحریک ‘ وسیب سے مذاق نہ کیا جائے ‘ ظہور دھریجہ

100دن میں صوبہ ورنہ تحریک ‘ وسیب سے مذاق نہ کیا جائے ‘ ظہور دھریجہ

  

ملتان(سٹی رپورٹر)صوبہ بنانے کے لئے 100دن کے وعدے سے انحراف نہیں کرنے دیں گے ۔ وزیراعلیٰ اپنا یہ بیان واپس لیں کہ جنوبی پنجاب صوبہ بنے گا لیکن یہ نہیں کہہ سکتے کہ کب بنے گا؟ ان خیالات کا اظہار سرائیکستان قومی کونسل کے صدر ظہور دھریجہ نے سرائیکستان آگاہی مہم کے سلسلے میں بستی سندھڑ میں ملک منظور سندھڑ اور دوسروں سے ملاقات کے دوران کیا ۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ کا تعلق(بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

جنوبی پنجاب صوبہ محاذ سے تھا اور صوبہ محاذ نے عمران خان سے 100 دن کے اندر صوبہ بنانے کا تحریری معاہدہ لیا ۔ لیکن اس ستم ظریفی کو کیا نام دیا جائے کہ جن لوگوں نے وعدے سے مکرنے والوں کا محاسبہ کرنا تھا ‘ وہ خود اپنی بات پر قائم نہیں رہے ۔ ظہور دھریجہ نے کہا کہ 100 دنوں کے اندر صوبہ نہ بنایا گیا تو ہم احتجاجی تحریک شروع کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ن لیگ اور پیپلز پارٹی کی طرح تحریک انصاف نے بھی صرف لولی پاپ پر اکتفا کیا تو ہم دھرنے دیں گے ، لانگ مارچ شروع کریں گے اور جیل بھرو تحریک سے بھی دریغ نہیں کیا جائے گا۔ ظہور دھریجہ نے کہا کہ سرائیکی وسیب سے مذاق بند ہونا چاہئے ۔ وزیراعلیٰ اپنا بیان واپس لیں اور100 دنوں میں صوبے کے قیام کے لئے اقدامات کا اعلان کریں ۔ انہوں نے کہا کہ ملک رفیق رجوانہ نے گورنری لیکر صوبے کے ایشو کو پسِ پشت ڈالا اور سول سیکرٹریٹ نہ بن سکا ۔ آج ان سے کوئی پوچھنے والا نہیں ۔ اگر موجودہ حکمرانوں نے بھی اسی طرح دھوکہ کیا تو ان کا حشر سابقہ حکمرانوں سے بھی بد تر ہو گا۔ وسیب کے لوگ خیرات نہیں اپنا حق مانگتے ہیں اور بلا تاخیر وسیب کی شناخت اور مکمل حدود پر مشتمل صوبہ سرائیکستان کے قیام کیلئے اقدامات کئے جائیں ۔

ظہور دھریجہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -