دفعہ35Aکے دفاع کیلئے کشمیر یونیورسٹی کے طلباء وطالبات کاشدیداحتجاج

دفعہ35Aکے دفاع کیلئے کشمیر یونیورسٹی کے طلباء وطالبات کاشدیداحتجاج

  

مظفرآباد (وقائع نگار خصوصی)مقبوضہ متنازعہ ریاست جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت دفعہ 35Aکے دفاع میں کشمیر یونیورسٹی کے طلبہ و طالبات سڑکوں پر آگئے، انٹرنیشنل فورم فار جسٹس اینڈ ہیومن رائٹس جموں کشمیر کے زیراہتمام بھارت مخالف ریلی، نعروں سے فضا گونج اٹھی، ریلی یونیورسٹی گیٹ سے نکالی گئی جس میں پروفیسر صاحبان کے علاوہ سیاسی و سماجی شخصیات نے بھی شرکت کی، شرکا کا یونیورسٹی گیٹ سے سی ایم ایچ تک مارچ بھارتی عدالتی جارحیت نا منظور، بھارتی قبضہ نا منظور کے نعروں سمیت بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے خلاف بھی شدید نعرے بازی کی گئی، ریلی سے پروفیسر ڈاکٹر نثار ہمدانی، وائس چیئرمین انٹرنیشنل فورم فار جسٹس اینڈ ہیومن رائٹس جموں کشمیر مشتاق الاسلام، پاسبان حریت جموں کشمیر کے چیئرمین عزیر احمد غزالی، پیپلزپارٹی کے رہنما شوکت جاوید میر، پروفیسر الیاس آفریدی، پروفیسر ڈاکٹر ریحانہ سرور، شاہد الحق، مریم اشفاق، کرن انصر، بشری ہاشمی نے خطاب کیا، ریلی سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر نثار ہمدانی نے کہا کہ بھارت جموں کشمیر میں کشمیریوں کی اکثریت کو اقلیت میں بدلنے کی مذموم کوششیں بند کرے، غاصب جابر بھارتی حکمرانوں کے مکرو عزائم کو جموں کشمیر کے عوام کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دینگے، وائس چیئرمین فورم مشتاق الاسلام نے کہا کہ ہندوستان 71 برسوں سے مقبوضہ جموں کشمیر میں انسانی حقوق کی دھجیاں بکھیر رہا ہے اور اب جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کے درپے ہے، جس کو جموں کشمیر کے عوام جیتے جی کامیاب نہیں ہونے دینگے، انسانی حقوق پر کام کرنیوالی عالمی تنظیموں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ بھارت کے اس غیر قانونی، غیر آیئنی اقدام کا نوٹس لے، انہوں نے کہا کہ چیئرمین محمد احسن انتو کی ہدایت پر ریاست گیر احتجاج کا سلسلہ جاری ہے اور بھارت کے اس غیر آئینی اقدام کے خلاف جموں کشمیر کے عوام میں غم و غصہ کا اظہار پایا جارہا ہے، جموں کشمیر کا بچہ بچہ ریاست جموں کشمیر کی وحدت کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریگا، اس موقع پر چیئرمین پاسبان حریت جموں کشمیر عزیر احمد غزالی نے کہا کہ جموں کشمیر متنازعہ ریاست ہے اقوام متحدہ سے تسلیم شدہ حل طلب قضیہ ہے ہندوستان نے 71 برسوں سے جموں کشمیر کے عوام پر بربریت کے پہاڑ توڑے مگر وہ اپنے مقاصد کی تکمیل میں ناکام رہا ہے اب بھارت ریاست کی جغرافیائی ہیئت، مسلم اکثریت کو اقلیت میں بدلنے، جموں کشمیر کے شاندار کلچر اور ثقافت کو مسمارکرنے کی سازشوں میں مصروف ہے ہندوستان یاد رکھے جموں کشمیر کے نڈر، بہادر اورغیور عوام کبھی اس کومکروہ عزائم میں کامیاب نہیں ہونے دینگے، ان کا کہنا تھا کے متحدہ حریت قیادت کی کال پر جموں کشمیر کی عوام یکجا ہیں، پیپلزپارٹی کے رہنما شوکت جاوید میر نے کہا کہ بھارت عالمی قوانین کو پاوں تلے روند رہا ہے اور عالمی برادری خاموشی اختیار کئے ہوئے ہے جو لمحہ فکریہ ہے، آزادکشمیر کے عوام مقبوضہ جموں کشمیر کے بھائیوں کے ساتھ ہیں اور بھارت کو اس کے مکروہ عزائم میں کامیاب نہیں ہونے دینگے، مقررین نے کہا کہ آزادکشمیر کے عوام بالخصوص طلبہ و طالبات نے بھارت سے آزادی حاصل کرنے کے لئے مظلوم جموں کشمیر کے عوام کیساتھ یکجہتی کا جو سلسلہ شروع کیا ہے یہ تکمیل آزادی میں سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے آزادکشمیر کے عوام، سیاسی جماعتیں، سماجی تنظیمیں جموں کشمیر کی موجودہ صورتحال پر خاموش نہیں متحدہ حریت قیادت کی کال کی منتظر ہیں ہم اپنے مظلوم بھائیوں کو تنہا نہیں چھوڑیں گے، مقررین نے جامعہ کشمیر کے طلبا و طالبات سمیت پروفیسرز صاحبان کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ آج کا نوجوان بھارت کے مکروہ عزائم کیخلاف کمر بستہ ہے، ہندوستان کو چاہیئے کہ وہ فی الفور جموں کشمیر سے اپنی فوج کا انخلا کرے۔ ریلی کے اختتام پر کنٹرول لائن پر بھارتی جارحیت کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے پاکستان کی سلامتی، کشمیر کی آزادی، شہدائے کشمیر کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی کی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -