میڈیکل کالجز میں داخلے کے امیدواروں کا احتجاجی مظاہرہ 

میڈیکل کالجز میں داخلے کے امیدواروں کا احتجاجی مظاہرہ 

  

پشاور(سٹی رپورٹر)میڈیکل کالجز میں داخلے کے امیدوار طلباء نے ایٹا ٹیسٹ کے نمبرز 50 سے بڑھا کر 70فیصد کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیامظاہرے میں مختلف طلباء تنظیمو ں کے کارکنان نے شرکت کی مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جس پر انکے حق میں مطالبات درج تھے اس موقع پر طلباء کا کہنا تھا کہ   ملک کے دیگر صوبوں میں انٹری ٹسٹ اکتوبر میں منغقد کئے جارہے ہیں جبکہ کے پی کے میں ستمبر میں منعقد کرنا زیادتی ہے جو کسی صورت قبول نہیں کرینگے۔انہوں نے کہا کہ ایٹا ٹسٹ کریٹیریامیں طلباء کے ساتھ ظلم ہورہا ہے اس ظلم کو بند کرکے ٹسٹ کرییٹریا کو تبدیل کیا جائے اور ٹسٹ کو زیادہ ویٹیج دیا جائے۔انکا کہنا تھا کہ اس سال کورونا کی وجہ سے طلباء کو بغیر امتحان کے نمبر دئیے گئے ہیں اس وجہ سے کریٹیریا میں ٹسٹ کو زیا دہ اہمیت دی جائے تا کہ محنت کرنے والے طالب علم کو انکے محنت کا صلہ ملے اور میرٹ کے مطابق اہل ترین طلبہ ٹسٹ میں سیلیکٹ ہو سکے۔طلباء نے پی ایم ڈٰ سی حکام ے مطالبہ کیا ہے کہ میڈیکل کالج داخلوں میں ایٹا ٹیسٹ کے نمبر 50 سے بڑھا کر 70 فیصد کرنے کیے جائے جبکہ ایف ایس سی کے 50 فیصد نمبر کی شرط کو ختم کرکے 30 فیصد کی جائے اور ایٹا  ٹیسٹ کو 20ستمبر کی بجائے 25اکتوبر کو لیا جائے تاکہ مستحق اور قابل طلباء کو انکا حق ملے کیونکہ پچھلے سال بھی میڈیکل انٹری ٹیسٹ طریقہ کار سے سینکڑوں امیدوار متاثر ہوئے تھے اسی لئے متعلقہ حکام امسال ٹیسٹ کے معیار پر نظر ثانی کریں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -