وہ بیٹری جو ایک چارج پر ہزاروں سال چلے

وہ بیٹری جو ایک چارج پر ہزاروں سال چلے
وہ بیٹری جو ایک چارج پر ہزاروں سال چلے

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) آج موبائل فون صارفین کے دو بڑے مسائل انٹرنیٹ کی رفتار اور بیٹری لائف ہیں۔ انٹرنیٹ بھی روزافزوں ترقی کر رہا ہے اور اس کی رفتار بہت کچھ بہتر ہو چکی ہے، تاہم ایک امریکی کمپنی نے بیٹری لائف والے مسئلہ کا ایک ایسا حل نکال لیا ہے کہ آپ ایک بار چارج کی ہوئی بیٹری نہ صرف پوری زندگی استعمال کریں گے بلکہ آپ کی آئندہ ہزاروں نسلیں بھی وہی آپ کی چارج کی ہوئی بیٹری استعمال کریں گی۔ آپ حیران مت ہوں، کیونکہ یہ بات ایک حقیقت ہے۔ امریکی ریاست کیلیفورنیا کی اس کمپنی کا نام ’این ڈی بی‘ ہے جس نے ایسی بیٹری تیار کر لی ہے جو ایک بار چارج کرنے کے بعد 5ہزار سال تک استعمال کی جا سکے گی۔ 

رپورٹ کے مطابق یہ ’نینو ڈائمنڈ بیٹری‘ (Nano-diamond battery)ہے جو نیوکلیئر ویسٹ (Nuclear waste)سے بنائی گئی ہے اور اس کے اوپر ہیروں کی تہہ لگائی گئی ہے۔ ہیرا چونکہ دنیا کی سخت ترین چیز ہے چنانچہ اس بیٹری سے تابکاری صرف اتنی ہی خارج ہوگی جتنی کہ انسانی جسم سے ہوتی ہے۔ اس بیٹری میں برقی کرنٹ تابکار آئسوٹوپس’کاربن 14‘ سے پیدا ہو گا جو کہ ایٹمی ری ایکٹرز میں استعمال ہوتے ہیں۔ این ڈی بی کے ماہرین نے لارنس لیورمور نیشنل لیبارٹری کیلیفورنیا اور کیمبرج یونیورسٹی کی کیونڈش لیبارٹری میں دو بار اس بیٹری کو 40فیصد چارج کرنے کا عملی مظاہرہ کر چکی ہے اور ماہرین کا کہنا ہے کہ جلد وہ اس بیٹری کو 90فیصد چارج کرنے کے قابل ہو جائیں گے۔ یہ بیٹری اگر آج2020ءمیں چارج کی جائے تو یہ لگ بھگ 7020ءتک چلتی رہے گی، ’اگر اس سے پہلے قیامت نہ آ گئی تو‘۔این ڈی بی کے ماہرین کا کہنا ہے کہ وہ ایسی بیٹری تیار کرنا چاہتے ہیں جو 28ہزار سال تک چلے۔کمپنی کی طرف سے تاحال یہ نہیں بتایا گیا کہ یہ بیٹری کب تک مارکیٹ میں دستیاب ہو گی اور اس کی قیمت کیا ہو گی۔

مزید :

سائنس اور ٹیکنالوجی -