پاکستانی ای اینڈ پی کمپنیزکنسورشیم کا ابوظہبی میں آف شور بلاک 5کا حصول  

  پاکستانی ای اینڈ پی کمپنیزکنسورشیم کا ابوظہبی میں آف شور بلاک 5کا حصول  

  

اسلام آباد،(پ ر)پاکستانی ای اینڈ پی کمپنیز کنسورشیم جس میں آئل اینڈ گیس ڈیویلپمنٹ کمپنی لمیٹڈ (او جی ڈی سی ایل)، ماری پیٹرولئیم کمپنی لمیٹڈ (ایم پی سی ایل) اور گورنمنٹ ہولڈنگز(پرائیویٹ) لمیٹڈ (جی ایچ پی ایل) اور پاکستان پٹرولیم لمیٹڈ (پی پی ایل) بطور آپریٹر نے ابوظہبی میں ہونے والی بولیوں کے دوسرے مسابقتی مرحلے میں آف شور بلاک5 حاصل کرلیا ہے۔یہ آف شوربلاک 6223 مربع کلومیٹر کے رقبے پر محیط ہے اورابوظہبی شہر سے 100 کلومیٹر شمال مشرق  میں واقع ہے۔   ایکسپلوریشن کنسیشن معاہدے پر کنسورشیم کی جانب سے ایم ڈی و سی ای او پی پی ایل معین رضا خان اور متحدہ عرب امارات(یو اے ای)  کے وزیر صنعت و جدید ٹیکنالوجی اور ابوظہبی نیشنل آئل   کمپنی (اے ڈی این او سی ) کے مینیجنگ ڈائریکٹر اور گروپ سی ای او ڈاکٹر سلطان احمد الجابرنے  گزشتہ روز دستخط کئے۔  وفاقی وزیرِ توانائی حماد اظہر نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ  " اگرچہ پاکستان اورمتحدہ عرب امارات طویل اور دوستانہ دوطرفہ تعلقات رکھتے ہیں لیکن یہ ایوارڈ توانائی کے حوالے سے دونوں ملکوں کے لئے ایک نئی شروعات ہے۔ اس وقت جب پاکستان ملک میں توانائی کی بڑھتی ہوئی طلب سے نمٹ رہا ہے تو  تعاون کے لئے اس طرح کے سنگ میل یقینی طور پر توانائی کی فراہمی اور طلب کے فرق کو کم کرنے میں ملک کے لئے مددگار ہوں گے"۔تیل و گیس کی تلاش، ترقی اور پیداوار کے لئے(اے ڈی این او سی) کی طرف سے امارات کا یہ مسابقی بولی کا دوسرا مرحلہ ہے۔یہ تاریخی معاہدہ متحدہ عرب امارات اور اسلامی جمہوریہ پاکستان کے درمیان قائم گہرے باہمی تعلقات پرمبنی ہے-او جی ڈی سی ایل کے ایم ڈی و سی ای او شاہد سلیم نے کہا" اوجی ڈی سی ایل نے اپنی ترقی پر مبنی کاروباری حکمتِ عملی کے مطابق اپنے بین الاقوامی سفر کا آغاز  کیا ہے۔ ابو ظہبی کے آف شور بلاک 5 میں شراکت، کمپنی کے اپنے دریافتی و پیداواری پورٹ فولیومیں اضافہ کرنے اورذخائر کی تجدید کے تناسب کو بہتر بنانے کے عزم کا اظہار ہے"۔

مزید :

کامرس -