وقت کے ساتھ انسان کی سوچ و رویہ بدل جاتے ہیں، مہک نور

  وقت کے ساتھ انسان کی سوچ و رویہ بدل جاتے ہیں، مہک نور

  

لاہور(فلم رپورٹر)فلم اور سٹیج کی معروف اداکارہ و پرفارمرمہک نور نے کہا کہ گزرتے وقت کے ساتھ انسان کی سوچ اور رویے بھی تبدیل ہوتے ہیں اور اس میں پختگی آتی ہے، زمانے سے بہت کچھ سیکھا ہے اور میں اچھے برے اور دوست دشمن کی تفریق کر سکتی ہوں، ہمارے ہاں صرف دوسروں کے کردار پر نظر رکھنے کا رواج ہے جس سے معاشرے میں عجیب سی ہیجان کی کیفیت ہے۔میں ان دنوں سُپر سٹار شاہد خان کے مقابل ایک پشتو فلم ”مکوہ لوفر دے“ میں مرکزی کردار ادا کررہی ہوں اس فلم میں  میرا رول پاور اور پرفارمنس سے بھرپور ہے۔ مہک نورنے کہا کہ شوبز انڈسٹری میں وقت گزارنے کے بعدمیں نے بہت کچھ سیکھا ہے اور خصوصاً تلخ تجربات سے میر ے اندر پختگی آئی ہے۔ مہک نور نے کہا کہ جو شوبز میں آ گیا اس کے فن کی پیاس کبھی نہیں بجھتی بلکہ وہ اپنے لئے بہترین سے بہترین کردار کی تلاش میں سر گرداں رہتا ہے۔ میرے کریڈٹ پر بہت اچھے کردار موجود ہیں لیکن آج بھی ایسا کردار اد اکرنے کی خواہش ہے جسے میرے پرستار مدتوں میری نسبت سے یاد رکھیں۔ میں خوب جانتی ہوں کہ کون کس زاویے سے بات کر رہا ہے اور ا س کا اصل مقصد کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آپ کواگر دنیا کے ساتھ چلنا ہے تو کچھ چیزوں کو نظر انداز کرنا پڑتا ہے لیکن میں نے اس کی بھی ایک حد مقرر کر رکھی ہے۔

مہک نور نے کہا ہے کہ فلم انڈسٹری میں مجھے اتنا تجربہ ضرور ہو گیا ہے کہ کون آپ کا دوست او ر کون دشمن ہے اور میں اچھے برے کی تمیز بھی کر سکتی ہو ں۔ 

مزید :

کلچر -