دہشتگردی کی جنگ نے قبائلی عوام کو پتھر کے زمانے میں دھکیل دیا: شیخ جہانزادہ

      دہشتگردی کی جنگ نے قبائلی عوام کو پتھر کے زمانے میں دھکیل دیا: شیخ ...

  

 ضلع مہمند(نمائندہ پاکستان) قبائلی اضلاع کی دوبارہ آباد کاری اور ترقی کے لئے سرکار اور عوام مشترکہ کوششیں کریں۔دہشت گردی نے قبائلی عوام کو پتھر کے زمانے میں لے گئی۔گھر بار تباہ اور روزگار کے مواقع ختم ہوچکے ہیں۔حکومت کا قبائل کے ساتھ 100 ارب روپے کا وعدہ ہی وعدہ رہ گیا۔پرامن افغانستان خطے کے مفاد میں ہے۔پرائے کی جنگ میں بیرونی ایجنڈوں کو تقویت مل گئے۔شیخ جہانزادہ کا مہمند پریس کلب میں اظہار خیال، عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی ورکننگ کمیٹی کے ممبر شیخ جہانزادہ آف ناواگئی نے مہمند پریس کلب میں اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا۔کہ پرامن افغانستان خطے کی مفاد میں ہے۔اور ہم ہمسایہ ملک میں امن کی خواہاں ہیں۔کیونکہ ہم امن کے داعی ہے۔ اور دہشت گردی کے خلاف پرائے جنگ نے ہم کو ترقی سے بہت دور لے گئے۔اور دہشت گردی میں بیرونی طاقتوں کی ایجنڈوں کو تقویت مل گئی۔جبکہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قبائلی عوام کو لامحدود نقصانات کا سامنا ہوا۔جہاں قبائلی اضلاع میں گھر بار تباہ اور روزگار کی مواقع ختم ہو گئے۔مگر بدقسمتی سے انضمام میں قبائلیوں کے ساتھ 100 ارب کی وعدے وقتی ثابت ہوگئے۔اور ساتھ انضمام سے قبل افسر شاہی جیسے اختیارات اب مقامی انتظامیہ اے ڈی آر کے شکل میں بحال رکھنا چاہتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ ڈسٹرکٹ کورٹس میں وکلاء موکلین سے بھاری فیس وصول کر رہے ہیں۔جوکہ قابل افسوس ہے چونکہ وکلاء متاثرہ قبائلیوں کے ساتھ نرمی کر کے مفت یا کم فیسوں پر مقدمات لڑے۔انہوں نے معدنیات کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا۔کہ قبائلی اضلاع میں وسیع پیمانے پر معدنیات کی ذخائر موجود ہیں۔جن کے لئے متعلقہ محکمہ اور انتظامیہ غیر قانونی لیزیں جاری کرتے ہیں۔لہٰذا ایک جامع حکمت عملی وضع کر کے عوام کی حقوق محفوظ کی جائے۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت انضمام کے وقت کئے گئے وعدے نبھائیں۔اور قبائلی عوام کو مسمار مکانات اور روزگار کی معاوضے فوری ادا کریں۔جبکہ سرکاری مراکز میں غیر حاضر عملہ بحال کر کے بجلی کے بجائے سولر سسٹم متعارف کروائی۔انہوں نے پناہ گزین قبائلی عوام سے واپسی اوراپنے آبائی وطن دوبارہ آباد کاری کی اپیل کی۔کیونکہ سرکاراور عوام کی مشترکہ جدوجہد سے آباد کاری اور ترقی ممکن ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -