دو سالہ بچے نے والدین کی ازدواجی زندگی ہی ختم کردی

دو سالہ بچے نے والدین کی ازدواجی زندگی ہی ختم کردی
دو سالہ بچے نے والدین کی ازدواجی زندگی ہی ختم کردی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) بچے کی آمد ماں باپ کے رشتے کو مضبوط کر دیتی ہے، کیونکہ اگر ماں باپ میں سے کوئی علیحدگی کے بارے میں سوچ بھی رہا ہو تو وہ بچے کی خاطر سمجھوتہ کرلیتا ہے۔ تاہم برطانیہ میں ایک خاتون نے اپنے بچے کی وجہ سے اپنا گھر ٹوٹنے اور زندگی برباد ہونے کی ایسی بات کہہ دی ہے کہ سننے والے حیران رہ گئے۔ دی سن کے مطابق اس خاتون نے بحث و مباحثے کی ویب سائٹ Redditپر بتایا ہے کہ میرے دو سالہ بچے نے میری زندگی پر گویا قبضہ کر لیا ہے اورمیری زندگی اور اپنے باپ کے ساتھ میرا ازدواجی رشتہ تباہ کرکے رکھ دیا ہے اور مجھے سمجھ نہیں آ رہی کہ کیا کروں۔

خاتون لکھتی ہے کہ ”میں نہیں جانتی کہ دیگر خواتین کے ساتھ بھی ایسا ہوتا ہے یا نہیں مگر میرے بچے کی پیدائش کے بعد میری ذاتی اور ازدواجی زندگیاں ختم ہو کر رہ گئی ہیں۔ میں دن رات بچے کی دیکھ بھال میں لگی رہتی ہوں۔ میرا کیریئر ختم ہو گیا ہے، اپنے شوہر کو وقت نہ دینے کی وجہ سے عملاً ہمارا رشتہ ختم ہوچکا ہے۔میرا شوہر بھی یہ کہتا ہے کہ بچے کی ہمہ وقت کی من مانی کے سبب ہماری زندگی تباہ ہو کر رہ گئی ہے۔گھر میں کوئی ایک لمحہ ایسا نہیں ہوتا جب ہمارا بچہ چیخ چلا نہ رہا ہو یا شور نہ مچا رہا ہو۔وہ کبھی اکیلے نہیں کھیلتا، اسے ہمہ وقت میرا ساتھ چاہیے اور اگر میں ایک لمحے کو الگ ہوں تو وہ ایسا شور مچاتا ہے کہ میں سب کچھ چھوڑ کر اس کے پاس آنے پر مجبور ہو جاتی ہوں۔میں جانتی ہوں کہ میری باتیں کچھ عجیب سی ہیں لیکن مجھے سمجھ نہیں آتی کہ اس صورتحال سے کیسے نکلوں۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -