پبلک پرائیویٹ سیکٹرکے مستحکم تعلقات کیلئے ٹیکس اصلاحات متعارف کی جائیں

پبلک پرائیویٹ سیکٹرکے مستحکم تعلقات کیلئے ٹیکس اصلاحات متعارف کی جائیں

 لاہور(کامرس رپورٹر)لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے نائب صدر سید محمود غزنوی نے حکومت پر زور دیا ہے کہ پبلک اور پرائیویٹ سیکٹر کے تعلقات مستحکم بنانے کے لیے ٹیکس اصلاحات متعارف کرائے، فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے ٹیکس دہندگان کے بینک اکاؤنٹس تک رسائی اور ایس آر کلچر سے کاروباری ماحول پر منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں لہذا ایسے اقدامات سے گریز کیا جائے۔ ایک بیان میں سید محود غزنوی نے کہا کہ ترقی یافتہ ممالک میں صنعت و تجارت دوست پالیسیاں تشکیل دینے کے لیے سٹیک ہولڈرز سے مشاورت یقینی بنائی جاتی ہے لیکن ہمارے ہاں اس کا فقدان ہے جس کی وجہ سے کاروباری برادری کے لیے بہت سے مسائل پیدا ہورہے ہیں۔ لاہور چیمبر کے نائب صدر نے کہا کہ ٹیکس دہندگان کے بینک اکاؤنٹس تک رسائی اور سٹیک ہولڈرز کی مشاورت کے بغیر ایس آر او جاری کرنے کے جیسے اقدامات کی وجہ سے نہ صرف ٹیکس دہندگان کو شدید مشکلات درپیش ہیں بلکہ حکومت کی ساکھ بھی بْری طرح متاثر ہورہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو تاجر برادری کی سہولت کے لیے قائم کیا گیا تھا لیکن یہ اپنا حقیقی کردار نہیں نبھا رہا جس کی وجہ سے تاجر برادری اور ایف بی آر کے درمیان عدم اعتماد کی فضا پیدا ہورہی ہے۔ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے نائب صدر نے کہا کہ ایف بی آر کوٹیکس نیٹ کو وسعت دینے اور انڈر انوائسنگ و سمگلنگ پر قابو پانے کے لیے اقدامات اٹھانے چاہئیں لیکن یہ واجبات کی وصولی کے نام پر ٹیکس دہندگان کے بینک اکاؤنٹس تک رسائی حاصل اور ایس آر او کلچر کو فروغ دیکر حالات بگاڑنے میں مصروف ہے۔   سید محمود غزنوی نے کہا کہ مشکلات پیدا کرنے کے بجائے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو ایماندار ٹیکس دہندگان کا شکرگزار ہونا چاہیے جو ٹیکس کی ادائیگی کی صورت میں اپنا قومی فریضہ بہ احسن ادا کررہے ہیں۔ لاہور چیمبر کے نائب صدر نے حکومت پر زور دیا کہ وہ تاجر برادری کی مشاورت سے فوری طور پر ٹیکس اصلاحات متعارف کرائے تاکہ کاروباری فضا بہتر ہو۔

مزید : کامرس