خیبر ایجنسی ‘ باڑہ میں دھماکے‘ 2سیکورٹی اہلکار وں سمیت 5افراد شہید ‘ 10سے زائد زخمی

خیبر ایجنسی ‘ باڑہ میں دھماکے‘ 2سیکورٹی اہلکار وں سمیت 5افراد شہید ‘ 10سے ...

باڑہ/خیبر ایجنسی(آن لائن ،اے این این) خیبر ایجنسی اور جنوبی وزیرستان میں بارودی سرنگ پھٹنے اور بم دھماکے کے نتیجے میں 2سکیورٹی اہلکاروں سمیت5افراد جاں بحق10سے زائد زخمی ہو گئے،سکیورٹی فورسز کے قافلے کو وادی تیراہ کے قریب اس وقت بارودی سرنگ سے نشانہ بنایا گیا جب وہ افغان سرحد کی جانب پیش قدمی کر رہا تھا،جنوبی وزیرستان میں گھر کے اندر دھماکہ ہوا جس میں 3افراد جاں بحق9زخمی ہوئے۔تفصیلات کے مطابق بدھ کی صبح خیبر ایجنسی کی وادی تیراہ کے علاقے نرے بابا میں سکیورٹی فورسز کی پیشقدمی کے دوران بارودی سرنگ دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں حوالدار حضرحیات اور سپاہی افتخار شہید ہوگئے جبکہ3اہلکاروں کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔باردوی سرنگ کے دھماکے میں سکیورٹی فورسز کی ایک گاڑی کو بھی نقصان پہنچا ہے۔شہید ہونے والی اہلکاروں کی لاشیں ہیلی کاپٹر کے ذریعے آبائی علاقوں کو روانہ کر دیا گیا ہے جبکہ زخمیوں کو باڑہ میں ایجنسی ہیڈ کوارٹر ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔ سکیورٹی فورسز کے قافلے کو باردوی سرنگ اس وقت نشانہ بنایا گیا ہے جب وہ افغان سرحد کی جانب پیش قدمی کر رہا تھا۔اس علاقے میں پاک فوج کا آپریشن ٹو جاری ہے جس میں اب تک 100سے زائد دہشتگرد مارے جا چکے ہیں۔سکیورٹی فورسز نے دہشتگردوں کے درجنوں ٹھکانے بھی تباہ کر دئیے ہیں۔دریں اثناء جنووزیر ستان کے علاقے بگن میں ایک گھر میں ہونے والے دھماکے میں 3افراد جاں بحق اور 9زخمی ہو گئے ہیں۔پولیٹیکل انتظامیہ نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ بگن میں گھر کے اندر دھماکہ ہواجس کے نتیجے میں 12افراد زخمی ہو ئے ہیں جنھیں صدہ ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق دھماکے میں زخمیہونے والے 3افراد بعد میں دم توڑ گئے جبکہ 9زخمی زیر علاج ہیں۔زخمی ہونے والے افراد میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔یاد رہے کہ جنوبی وزیرستان میں 2009 میں فوجی آپریشن راہ نجات شروع کیا گیا تھا جس میں سات لاکھ افراد نقلِ مکانی کر کے ٹانک، ڈیرہ اسماعیل خان اور دیگر علاقوں کو چلے گئے تھے۔ ان متاثرین کی واپسی کا عمل 16مارچ کو شروع ہوا جبکہ جنوبی وزیرستان سے متصل شمالی وزیرستان میں گذشتہ سال جون میں آپریشن ضرب عضب کے نتیجے میں بے گھر ہونے والے تقریبا دس لاکھ سے زائد متاثرین کی واپسی کے عمل کا آغاز گذشتہ روز ہوا ہے۔فوج کے ترجمان کے مطابق آپریشن ضرب عضب میں شمالی وزیرستان کا اسی فیصد علاقہ شدت پسندوں سے پاک کیا جا چکا ہے۔

مزید : علاقائی