پارا چنار ،کار بم دھماکہ ،افسوسناک واقعہ کے بعد فضاء دوسرے روزبھی سوگوار رہی

پارا چنار ،کار بم دھماکہ ،افسوسناک واقعہ کے بعد فضاء دوسرے روزبھی سوگوار رہی

پاراچنار (نمائندہ پاکستان)پاراچنارمیں گذشتہ روز کار بم دھماکے کے افسوس ناک واقعے کے بعد دوسرے روز بھی ایجنسی کی فضا سوگوار رہی ، علاقے میں تین روزہ سوگ جاری ہے ، سوگ کے دسرے روز پاراچنار میں تمام کاروباری ادارے ، سرکاری اور پرائیویٹ تعلیمی ادارے بند رہے ، دھماکہ کے 24 شہداء کی تدفین مکمل ہوگئی اور انہیں ہزاروں اشکار آنکھوں کے سامنے ان کے آبائی قبرستانوں میں سپردخاک کیا گیا جبکہ مرکزی امام بارگاہ میں شہدا کے ایصال ثواب کیلئے قرآن حوانی اور فاتحہ حوانی ہوئی۔ ایجنسی ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر صابر حسین کے مطابق 136 زخمیوں کو ایجنسی ہیڈ کوارٹر ہسپتال پاراچنار لایا گیا جن میں 37 شدید زخمیوں ہیلی کاپٹر کے ذریعے پشاور منتقل کردیا کیا گیا اور 40 سے زائد زخمی پاراچنار میں زیر علاج ہیں جبکہ 80 سے زائد زخمیوں کو ہسپتال سے فارغ کیا جاچکا ہے۔ دھماکے کے 10 زخمیوں کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے۔ کرم ایجنسی کے سیاسی و سماجی رہنما ابرار حسین جان طوری پی پی پی کرم کے صدر جمیل حسین طوری نے صحافیوں کو بتایا کہ پاراچنار کرم ایجنسی میں بسنے والے غیور عوام محب وطن ہیں جس کی وجہ سے ہم پچھلے 7 سالوں سے اپنے پیاروں کے جنازے اٹھارے ہیں ہم پاکستان دشمن عناصر پر یہ واضح کرنا چاہتے ہیں کہ کرم ایجنسی کے عوام ان کے ناپاک عزائم خاک میں ملا دیں گے۔ پاراچنار بم دھماکے کے دوسرے دن کور کمانڈر پشاور نے پاراچنار کا دورہ کیا ان کے دورے کے موقع پر انتظامیہ نے مقامی صحافیوں یکسر نظر اندازکردیاگیا اور صحافیوں کو کوریج کیلئے دعوت نہیں دی۔ کور کمانڈر کے دورے کے موقع پر سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کئے گئے تھے جس کی وجہ سے شہر میں کرفیو کا سا سماں تھا سڑکوں کی بندش کے باعث عوام کو آنے جانے خصوصا دھماکے میں زخمی ہونے والے افراد کی لواحقین کا اپنے عزیز و اقارب کے ہمراہ ہسپتال جانا نا ممکن ہوگیا تھا جس کی وجہ سے لوگ صبح سے لیکر دوپہر 2 بجے تک انتظار کرتے رہے۔

مزید : کراچی صفحہ اول