غیر اعلانیہ بجلی بندش نے شہریوں کے فیوز اڑا دئیے: پانی نایاب

غیر اعلانیہ بجلی بندش نے شہریوں کے فیوز اڑا دئیے: پانی نایاب

میلسی ، خانقاہ شریف، کوٹلہ، مغلاں، راجن پور(نمائندہ گان) بجلی بحران پر قابو پانے کی حکومتی کوششیں ناکام ہوگئیں، دیہات اور شہر کے عوام کی زندگی یکساں اجیرنمیلسی سے نمائندہ پاکستان کے مطابق بجلی بحران پرقابوپانے کے دعوے ٹھس غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ نے شہریوں کی زندگی اجیرن کردی راتوں کو بجلی نہ ہونے کے باعث شہریوں کو مچھرکاٹنے لگے متعددافرادملیریا کا شکار ہوگئے دن کے اوقات میں بھی غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے باعث ویلڈرز۔کشیدہ کار۔ٹیلرز۔الیکٹرونکس کے سامان کی ریپئرنگ کرنے والے ہنرمندافراد سمیت کاروباری طبقہ بھی شدیدمندے ہیں۔خانقاہ شریف سے نمائندہ خصوصی کے مطابق خانقاہ شریف۔حبیب مسن۔گانور شاہ۔گھوٹھ مہرو و دہی علاقوں میں گرمی کی شروعات شروع ہوتے ہی لوڈشیڈنگ میں اضافہ کے(بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

باعث غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا اعلانیہ بھی بڑھ گیاگزشتہ تین روز سے 10گھنٹے تک لوڈشیڈنگ کی جانے لگی بجلی کی طویل بندش سے کاروبار ٹھپ اور پانی نیاب ہوکر رہ گیا شہری پانی کے حصول کیلئے نلکوں اور ٹیوب ویل کا رخ کرتے نظرآئے کوٹلہ مغلان سے نمائندہ پاکستان کے مطابق گرمی کی آمد سے قبل کوٹلہ مغلان میں لوڈ شیڈنگ کی انتہا ہو گئی ہے گلشن آباد جام پور نے بجلی کے سلسلہ میں کوٹلہ مغلان کی عوام کو نیم تصور کر رکھا ہے من چاہے بجلی کھول دیتے ہیں من چاہے دو دو دن تک بجلی بند کر دیتے ہیں گذشتہ کچھ دنوں سے کوٹلہ مغلان میں مقامی اہلکاروں کی مبینہ ملی بھگت سے کوٹلہ مغلان کی بجلی دوسرے علاقوں میں استعمال کراتے ہیں اور ناجائز طور پر لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے جو کہ سرا سر عوام کے ساتھ بھونڈا مذاق ہے ۔بجلی نہ ہونے سے کاروبارزندگی مفلوج ہو کر رہ گئی ہے گرمی کی آمد سے ہر طرف لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ یکساں ہے لیکن کوٹلہ مغلان میں لوڈ شیڈنگ کا طوفان بے قابو ہو چکا ہے ۔دکاندار دن بھر مکھیاں مار کر چلے جاتے ہیں اور طلبہ و طالبات کی تعلیمی سرگرمیاں ماند پڑ چکی ہیں اس سلسلہ میں شہریوں غلام حسن ،نوید احمد ،ایم شہزادسمیت دیگر نے کہ ہم نے متعدد بار اعلٰی حکام کو نوٹس دلانے کی کوشش کی ہے لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی ہے ۔راجن پور سے ڈسٹر کٹ رپورٹر کے مطابق راجن پور کے تاجروں،شہریوں اور سماجی شخصیات نے محکمہ واپڈا کی جانب سے غیراعلانیہ لوڈ شیڈ نگ کے دورانئے میں کئی گھنٹے اضافہ پر سخت غم وغصہ کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ بجلی چوری کرائی جارہی ہے جس کا خمیازہ عوام کو بھگتنا پڑرہا ہے واپڈااہلکار خود ہی بوگس میٹرز کے ذریعہ بڑے کارخانوں،کاروباری اداروں اور مارکیٹوں میں بوگس میٹرز لگا کر بجلی چوری میں ملوث ہیں اور وہی چوری شدہ یو نٹس عوام کے کھاتوں میں ڈال دیتے ہیں چوری کی دوسری بڑا سزا لوڈ شیڈ نگ کی صورت میں عام شہریوں کو بھگتنا پڑرہی ہے بجلی کی چوری کی روک تھام کی جائے اب جبکہ میٹر تصاویر ضروری کردی گئی ہے تو راجن پور میں کئی ہزار بل بجلی بغیر تصویر کے شہریوں کے ہاتھوں میں تھمائے جارہے ہیں جن کی تصحیح اور نوٹس لینا واپڈاانتظا میہ کاکام ہے شہریوں نے اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کا مطا لبہ کیا ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر