افتتاح کے بعداین ایچ اے کا بڑا یوٹرن، عبد الحکیم لاہور موٹروے پہلے رو ز ہی بند گاڑیاں واپس

افتتاح کے بعداین ایچ اے کا بڑا یوٹرن، عبد الحکیم لاہور موٹروے پہلے رو ز ہی ...

ملتان ( سٹاف رپورٹر) عبدالحکیم لاہور موٹر وے افتتاح کے بعد بند کر دی گئی ۔ سیکڑوں گاڑیاں واپس بھجوا دی گئیں ۔ ٹرانسپورٹروں اور مسافروں نے شدید احتجاج کیا۔بتایاگیا ہے کہ گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے جڑانوالہ انٹرچینج کے مقام پر لاہور۔عبدالحکیم موٹروے(M۔3)کا افتتاح کیا۔ M۔3 کا عام ٹریفک کے لئے گزشتہ روز سوموار یکم اپریل کو کھولنے کے اعلان کیا گیامگر اس کے ساتھ ہی اسے بند کر دیا گیا جس کے باعث گاڑیوں کی لمبی (بقیہ نمبر9صفحہ12پر )

لائنیں لگ گئیں ۔ ٹرانسپورٹروں ومسافروں نے اس موقع پر شدید احتجاج کیامگر ان کی کسی نے نہ سنی ۔ ٹرانسپورٹروں ‘ مسافروں اور گاڑی مالکان کے مطابق ایک تو یہ منصوبہ حکومت کی غفلت کا شکار ہوا جس کے باعث مسلسل تاخیر ہوئی ۔اس کے بعد عبدالحکیم لاہور موٹر وے کے افتتاح کا ڈھنڈورا پیٹا گیا ۔گزشتہ روز عام ٹریفک کے لئے کھولنے کا اعلان کرکے اسے بند کر دیا گیا جس کے باعث ٹرانسپورٹروں سمیت سیکڑوں گاڑی مالکان کو شدید پریشانی اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔انہوں نے اس صورتحال پر شدید احتجاج کیا اور واپس لوٹ گئے۔ اس بارے میں رابطہ کرنے پر این ایچ اے ملتان کے حکام نے وجوہات بتانے سے گریز کیا اور کہاکہ اس بارے میں لاہو رکے حکام ہی بتا سکتے ہیں کیونکہ یہ لاہور عبدالحکیم موٹر وے لاہور حکام کے تحت ہے۔ واضح رہے کہ لاہور۔عبدالحکیم موٹروے(M۔3) سیکشن کی کل لمبائی تقریباً 230 کلومیٹر ہے اوراس کی تعمیراتی لاگت148.654 ارب روپے ہے۔ یہ موٹروے شیخوپورہ، ننکانہ صاحب، فیصل آباد، ٹوبہ ٹیک سنگھ اور خانیوال کے اضلاع سے گزرتی ہے، جبکہ اس موٹروے پر جو شہر اور قصبے آبا د ہیں، ان میں لاہور، شیخو پورہ، مانگٹانوالہ، ننکانہ صاحب، بچیکی، جڑانوالہ، سیدوالا،تاندلیانوالہ،ستیانہ،سمندری،ماموں کانجن، مریدوالا،ٹوبہ ٹیک سنگھ،رجانہ،کمالیہ،پیرمحل،شورکوٹ اور کوٹ اسلام شامل ہیں۔چھ رویہ اس موٹروے کی لین کی چوڑائی 3.65 میٹر ہے، اسی طرح بیرونی شولڈر 3 میٹر اور اندرونی شولڈر ایک میٹر چوڑا ہے اور اس پر رفتار کی حد 120 کلومیٹر فی گھنٹہ رکھی گئی ہے۔لاہور۔عبدالحکیم موٹروے پر 8 انٹرچیجنز،3 سرو س ایریاز، 46پل،60 انڈر پاسز،مویشیوں کیلئے 201 گزر گاہیں اور705 کلورٹس تعمیر کئے گئے ہیں۔موٹر وے یکم اپریل کو کھولنے کا اعلان کرکے پھر بند کرنے سے ٹرانسپورٹروں و شہریوں میں مایوسی اور پریشانی کی لہر دوڑگئی ہے۔

بند

مزید : ملتان صفحہ آخر