حکومت کے پاس کرونا وبا ء سے نمٹنے کی کوئی حکمت عملی نہیں: شہبا ز شریف

حکومت کے پاس کرونا وبا ء سے نمٹنے کی کوئی حکمت عملی نہیں: شہبا ز شریف

  

لاہور،اسلام آباد(جنرل،سٹاف رپورٹرز)مسلم لیگ (ن) کے صدر، قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس روزانہ کی بنیا د پر منعقد کرنے کا مطالبہ کر تے ہوئے کہا ہے صوبوں کو نظر انداز کیا جانا مجرمانہ عمل اور بے حسی کی انتہاء ہے۔مسلم لیگ(ن) کے صدر و قا ئد حزب اختلاف شہباز شریف نے اپنے بیان میں کہا ڈاکٹرز، نرسز، طبی عملے اور صوبوں کو حفاظتی لباس، دیگر ضروری سامان کی ہنگامی بنیادو ں پر فراہمی یقینی بنائی جائے، دو دن میں کرونا کے مریضوں کی تعداد میں یکدم اضافہ شدید پریشانی کا باعث ہے، کرونا مر یضوں کی تعداد سیکڑوں سے ہزاروں میں تبدیل ہونا سنگین صورتحال کا اعلان ہے، جب تک حکومت کرونا کے ٹرینڈ کو سمجھے گی، بہت دیر ہوچکی ہوگی۔شہباز شر یف کا کہنا تھا صوبو ں کو وسائل کی فراہمی اور ان کی تقسیم کے طریقہ کار پر تاحال وضاحت نہیں دی گئی، فروری میں اسلام آباد سمیت تمام صوبوں نے حفاظتی لباس مانگا تھا لیکن وزیر اعظم نے انکار کر دیا، افسو س وزیراعظم اور ان کی ٹیم اب تک یہ بنیادی کام بھی نہیں کر پائی، ان کی کابینہ نے ضروری اشیاء کی منظوری نہ دیکر مجرمانہ غفلت کی، لاک ڈاؤن اور اس کے اثرات سے نمٹنے کیلئے حکومت کے پاس کوئی حکمت عملی نہیں ہے۔دوسری طرف مسلم لیگ (ن) نے کرونا وائرس سے نمٹنے کیلئے حکومتی پالیسی کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ ابھی تک اس معا ملے پر حکومت کوئی حکمت عملی سامنے نہیں لا سکی،دیگر لیگی رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا اس قومی امتحان میں اتحاد بہت ضروری ہے۔ و ا ئرس کا مقابلہ اس کے پھیلاؤ کو روک کر ہی کیا جا سکتا ہے لیکن پورا پاکستان لاک ڈاؤ ن نہیں۔ اس موقع پر بات کرتے ہوئے لیگی رہنما مصدق ملک کا کہنا تھا شہباز شریف کی ہدا یت پر مسلم لیگ (ن) نے اقدامات شروع کر دیے ہیں، ہم نے اقدامات نہ کیے تو مریضوں کی تعداد لاکھوں میں چلی جائے گی۔

شہباز شریف

مزید :

صفحہ اول -