کرونا کیخلاف جنگ‘ حکومت صوبائی قیادت‘ اداروں پر اعتماد کرے‘ لیاقت بلوچ

  کرونا کیخلاف جنگ‘ حکومت صوبائی قیادت‘ اداروں پر اعتماد کرے‘ لیاقت بلوچ

  

ملتان (سٹی رپورٹر)نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اور سابق پارلیمانی لیڈر لیاقت بلوچ نے اپوزیشن جماعتوں کے مشترکہ مطالبات کی حمایت کرتے ہوئے کہاہے کہ پارلیمانی جمہوریت کے دور میں قومی معاملات پر پارلیمنٹ کو ہی اہمیت دی جائے۔ حکومت متنازعہ ہے۔کورونا وبا کی زد میں پوری قوم ہے اس لیے پارلیمنٹ کی سینیٹ اور قومی اسمبلی کی اسٹینڈنگ(بقیہ نمبر35صفحہ6پر)

کمیٹیاں مشترکہ بنیادوں پر صحت کے امور کی نگرانی کریں اور کورونا کے خلاف جنگ کے امور میں پارلیمانی مشترکہ کمیٹی کو نگرانی کے لیے بااختیار بنایا جائے۔ وزیراعظم عمران خان کے علم میں یہ رہنا چاہیے کہ ماضی میں لشکر طیبہ، سپاہ محمد ؐ،سپاہ صحابہ ؓ، فیڈرل سیکورٹی فورس، نتھ فورس جیسی تنظیموں پر پابندیاں لگ گئیں، اب حکومت ٹائیگرفورس بنا کر ماضی کے فیصلوں کی نفی کر رہی ہے۔ وفاقی حکومت قومی قیادت، پارلیمنٹ، صوبائی حکومتوں اور ریاستی اداروں پر اعتماد کرے اور ان سے تعاون لے۔ کورونا وبا کے مقابلہ کے لیے حکمت اور احتیاط ضروری ہے۔ وزیراعظم اپنے کنفیوژ موقف اور اقدامات سے انتشار نہ پھیلائیں۔لیاقت بلوچ نے کہاکہ دنیا بھر میں لاک ڈاؤن کی سختیوں سے عوام پریشان اور اضطراب کا شکار ہو گئے ہیں جبکہ یہ لاک ڈاؤن احتیاطی تدابیر اور عوام کی زندگی اور صحت کے لیے ضروری تصور کیا گیا ہے، اسی سے اندازہ لگایا جائے کہ 210 دنوں سے بدترین لاک ڈاؤن کا شکار کشمیریوں کی کیا حالت ہوگئی ہوگی۔ اقوام متحدہ اور عالمی برادری، انسانی حقوق کی تنظیمیں جموں و کشمیر پر ناجائز قابض بھارتی حکومت پر دباؤ ڈالیں۔

لیاقت بلوچ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -