خان گڑھ‘ تھانے میں اہلکاروں کا خواتین پر تشدد‘ 2شدید زخمی

  خان گڑھ‘ تھانے میں اہلکاروں کا خواتین پر تشدد‘ 2شدید زخمی

  

مظفرگڑھ (نامہ نگار) خان گڑھ میں پولیس کی جانب سے تھانہ میں خواتین پر مبینہ تشدد کیا گیا جس سے دو خواتین زخمی ہوگئیں مظاہرین کے مطابق تھانہ خان گڑھ کی حدود بستی توحید آباد کے رہائشی مختیار احمد کے بچوں کا قریبی ہمسائے طارق ارائیں کے بچوں سے جھگڑا ہوا. جس کی بنا پر بڑوں میں جھگڑا ہو گیا. دونوں پارٹیوں نے ایک دوسرے کے خلاف درخواستیں (بقیہ نمبر40صفحہ6پر)

دے دیں. بدھ کے روز درخواست پر پولیس تھانہ خان گڑھ کے اے ایس آئی رانا جاوید نے مخالف پارٹی سے مبینہ رشوت وصول کرنے کے بعد مختیار احمد طور کو پکڑنے کے لئے اس کے گھر ریڈ کیا اور اس کے نہ ملنے پر اس کی والدہ حمیدہ اور بیوی حریشہ,بھابی حفصہ اور بھائی نذیر طور کو پکڑ کر تھانہ لے آیا جبکہ ان عورتوں پر محلے میں بھی تشدد کیا خواتین نے تھانہ آکر گیٹ پر 15 کو کال کی. اس دوران ایس ایچ او تھانہ چودھری جاوید اختر باہر آ گئے اور انہوں نے باہر ہی دونوں خواتین پر تشدد شروع کر دیا. جب مختیار تھانہ آیا تو اسے بھی تشدد کا نشانہ بنایا. جبکہ مختیار احمد کو پولیس تشدد سے بچانے کی کوشش کرنے والی خواتین حمیدہ بی بی اور حریشہ بی بی کو بھی ایس آئی رانا جاوید اور دیگر اہلکاروں نے مبینہ تشدد کا نشانہ بنایا اور خواتین کے کپڑے پھاڑ دیے خواتین پر تشدد کی اطلاع پر طور برادری کے افراد اور شہری مشتعل ہو گئے اور تھانہ کا گھیراؤ کر لیا.,اجتجاجی خواتین و مظاہرین نے پولیس کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ پنجاب,آئی جی پولیس, آر پی او ڈیرہ غازی خان اور ڈی پی او مظفرگڑھ سے انصاف فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔ جبکہ ایک خاتون نے پولیس تشدد کے خلاف تھانہ گیٹ پر پٹرول چھڑک کر خودکشی کی کوشش کی. جو شہریوں نے ناکام بنا دی. کئی گھنٹے مین روڈ بند رہا. اور درجنوں شہری تھانہ کے باہر سراپا احتجاج رہے. اطلاع ملنے پر مقامی راہنما پی ٹی آئی سردار آباد ڈوگر تھانہ پہنچے اور فریقین میں راضی نامہ کرا دیا. جبکہ سب انسپکٹر رانا جاوید نے متاثرہ فیملی سے معافی مانگ لی.

زخمی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -