بہاولپور‘ سیوریج پانی میں پولیو سمیت خطرناک جراثیموں کی موجودگی کا انکشاف

    بہاولپور‘ سیوریج پانی میں پولیو سمیت خطرناک جراثیموں کی موجودگی کا ...

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر) بہاولپورمیں ا کچی آبادی ٹبہ بدرشیر میں سیوریج ڈسپوزل تعمیرکیے گئے تھے اوروہاں پرپورے شہرکاگنداجمع ہونے کے بعدپائپ لائن کے ذریعے دریائے ستلج میں پھینکا جارہاتھاگزشتہ دنوں سیوریج لائن ٹوٹ جانے کے بعد ٹی ایم اے سٹی کے افسران وعملہ نے سیوریج لائن مرمت کرنے کی بجائے گندے پانی کارخ نہرٹوایل چھاونی مائنر(بقیہ نمبر44صفحہ6پر)

کی طرف موڑ دیاجس سے نہروں میں پانی کی بندش کے باوجود سیوریج کے گندے پانی سے بھرکر نہرچل رہی ہے اوریہ نہربہاولپورشہرکے گنجان آبادعلاقے سے گزرتی ہوئی کینٹ ایریا میں جاکرختم ہوتی ہے اورسیوریج کے پانی میں پولیوڈینگی اوردیگرخطرناک قسم کے وائرسز کی موجودگی کابھی انکشاف ہواہے مقامی لوگوں چوہدری لیاقت علی، ڈاکٹرمحمدعباس، ڈاکٹرزین اقدس، ملک نعمان، محمدبابر، محمدخالد ماسٹرنذیر، پروفیسر زوارحسین، ماسٹرعبدالنبی اوردیگرنے شدیداحتجاج کمشنر بہاولپوراوردیگرارباب اختیار سے سخت نوٹس لینے کامطالبہ کیاہے اس سلسلہ میں ایس ڈی اوانہارمحمدعثمان نے اپناموبائل ہی اٹینڈنہ کیاجبکہ تحصیل میٹروپولیٹن کارپوریشن کے چیف سینٹری انسپکٹرملک ریاض نے کہاکہ سیوریج لائن ٹوٹ جانے کے باعث کمشنربہاولپور کی اجازت سے نہرمیں پانی ڈالاجارہاہے جب تک سیوریج لائن تعمیرنہ ہوگی تب تک یہ پانی بندنہیں کیاجاسکتاہے۔ اس سلسلہ میں یونیسف کے نمائندہ ڈاکٹرمحمدذاکر نے بتایاکہ سیوریج کے پانی سے بیماریاں پھوٹنے کے خدشات پیداہوسکتے ہیں۔

انکشاف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -