رحیم یار خان‘ سرکاری اراضی پر قبضہ کی کوشش انتظامیہ کی انٹری گروپ سرغنہ موقع سے فرار

  رحیم یار خان‘ سرکاری اراضی پر قبضہ کی کوشش انتظامیہ کی انٹری گروپ سرغنہ ...

  

رحیم یارخان (بیورورپورٹ)کرونا وائرس اورلاک ڈاؤن کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے قبضہ گروپ سرگرم عمل ہوگیا نواحی گاؤں چک نمبر78پی میں محکمہ مال کی قیمتی (بقیہ نمبر29صفحہ6پر)

سرکاری تین ایکڑاراضی پر راتوں رات قبضہ‘اطلاع ملنے پر نائب تحصیل دارملک غیورعباس نے عملہ کے ہمراہ پہنچ کر قبضہ ختم کرانے کی کوشش کی تو قبضہ گروپ کا سرغنہ موقع سے فرارہوگیا جبکہ خواتین کو مزاحمت کے لیے آگے کردیااورکارسرکارمیں مداخلت کرتے ہوئے عملہ کے ساتھ ہاتھ پائی کی کوشش کی جس پر نائب تحصیلدار نے ضلعی انتظامیہ کے اعلی افسران کو اطلاع کردی گذشتہ روز اسسٹنٹ کمشنر کو اطلاع ملی کہ نواحی گاؤں چک نمبر 78پی میں محکمہ مال کی سرکاری اراضی پر لوگ قبضہ کررہے ہیں جس پر انہوں نے نائب تحصیلدار ملک غیورعباس اعوان کو بھیجا،انہوں نے دیکھا اللہ دتہ نے راتوں رات تقریباًدس مرلہ جگہ پر چھڑیاں اور چھپرے بناکر مال مویشی باندھ کرگیٹ لگا کر قبضہ کیا ہواتھا عملہ کو آتا دیکھ کر فرار ہوگیا جبکہ نائب تحصیلدار نے عملہ کے ہمراہ چھپرے کو گرادیا مال مویشی کھول دیے اسی اثناء میں اللہ دتہ کی بیوی نے اپنے بچوں اوردیگر بہنوں کے ساتھ سرکاری عملہ سے الجھنا شروع کردیا اورسنگین نتائج کی دھمکیاں دیں جس پر ملک غیورعباس اعوان نے خواتین سے کوئی بات نہیں کی اورواپس چلے گئے۔ اورجاتے ہوئے وارننگ دے گئے کہ وہ اس کی رپورٹ اسسٹنٹ کمشنر اوراعلی افسران کو دیں گے اور دوبارہ پولیس کے ساتھ کاروائی عمل میں لائی جائے گی تمام قبضہ گروپ اپنے اپنے قبضوں کو ختم کردیں ورنہ گورنمنٹ سخت کاروائی کریگی۔ واضح رہے کہ محکمہ مال کی تین ایکڑ سرکاری اراضی پر لوگوں نے عارضی کچے مکان اور چھڑیاں رکھ کر قبضے کئے ہوئے ہیں جن کو متعدد بار وارننگ دی جاچکی ہے،اہل علاقہ نے ڈپٹی کمشنر علی شہزاد، اسسٹنٹ کمشنر چوہدری اعتزازاحمد انجم سے مطالبہ کیاہے کہ اس قیمتی اراضی کو چاردیواری کرکے محفوظ کیا جائے،گاؤں میں کوئی عیدگاہ نہیں ہے،کوئی دستکاری سینٹر نہیں ہے، میڈیکل ڈسپنسری نہیں ہے اس جگہ کو ان منصوبوں کے لیے چار دیواری سے محفوظ بنایا جائے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -