صادق آباد: ڈاکٹرز کی غفلت سے نوجوان جاں بحق‘ ورثا کا شدید احتجاج

صادق آباد: ڈاکٹرز کی غفلت سے نوجوان جاں بحق‘ ورثا کا شدید احتجاج

  

صادق آباد(نمائندہ خصوصی)ڈاکٹروں کی مبینہ غفلت کے باعث 30سالہ نوجوان کی جان چلی گئی، علی کامران کو دل کی تکلیف ہونے پر ٹی ایچ کیوہسپتال کے ایمرجنسی وارڈ میں لایا گیا جہاں پر ڈاکٹروں نے توجہ نہ دی‘ مریض آدھے گھنٹے تک تڑپتا رہا تفصیل کے مطابق اسلم ٹاؤن کے رہائشی 30سالہ علی کامران کو گزشتہ روز اچانک دل کی تکلیف ہوئی، جسے(بقیہ نمبر20صفحہ6پر)

ریسکیو 1122نے فوری طور پر تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال صادق آباد کے ایمرجنسی وارڈ میں منتقل کیا، جہاں ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹروں نے علی کامران پر توجہ نہ دی،لیڈی سٹاف مریض کو انجکشن لگا کر چلی گئی، آدھے گھنٹے تک مریض بیڈ پر تڑپتا رہا، بار بار بلانے پر ڈاکٹر مریض کو چیک کرنے نہ آیا جس پر علی کامران دم توڑ گیا، ڈاکٹروں کی غفلت اور پر علی کامران کے ورثاء نے ہسپتال کے باہر شدید احتجاج کیا اور بتایا کہ ای سی جی روم میں ڈیوٹی پر موجود ایک لیڈی اور ایک میل سٹاف موبائل فونز پر لڈو کھیلتے رہے جس نے مریض پر ذرا توجہ بھی دی ہے جس کی ویڈیو بھی منظر عام پر آگئی ہے۔ انھوں نے وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار‘ صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر راشدہ یاسمین سے انکوائری کر کے ذمہ داروں کیخلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ دوسری جانب ایم ایس ڈاکٹر لیاقت چوہان نے بتایا کہ اس معاملہ بارے انکوائری کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے جو واقعہ کی انکوائری کر کے جلد رپورٹ سامنے لائے گی۔

احتجاج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -