جامعہ بنوری ٹاؤن کا گھر میں نماز جمعہ کی ادائیگی سے متعلق فتویٰ

جامعہ بنوری ٹاؤن کا گھر میں نماز جمعہ کی ادائیگی سے متعلق فتویٰ
جامعہ بنوری ٹاؤن کا گھر میں نماز جمعہ کی ادائیگی سے متعلق فتویٰ

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)جامعہ بنوری ٹاؤن نے گھر میں نماز جمعہ کی ادائیگی سے متعلق فتویٰ جاری کردیا۔

فتویٰ میں کہاگیاہے کہ کورونا وائرس کے باعث مساجد میں جانا ممکن نہ ہوتوکم از کم 4بالغ افراد گھر میں نماز جمعہ ادا کریں،گھر میں نماز جمعہ کی ادائیگی کے دوران دروازہ کھلا رکھا جائے،کوئی نماز میں شریک ہوناچاہے تو اسے نہ روکا جائے۔

فتویٰ میں کہاگیاہے کہ گھر میں بھی مسجد کی طرح دواذانوں اور خطبہ کے بعد نماز جمعہ ادا کی جائے، اگر کوئی شخص باجماعت نماز نہ پڑھ سکے تو وہ اکیلے نماز ظہر ادا کرے۔

جامعہ بنوری ٹاﺅن کے فتویٰ میں کہاگیا ہے کہ اگر مسجد میں پنج وقتہ نماز باجماعت پڑھنا ممکن نہ ہو تو گھر میں جماعت کرائی جائے، امام کے پیچھے ایک مرد یا ایک نابالغ بچہ ہو تو وہ امام کی دائیں جانب تھوڑا پیچھے کھڑا ہو،اگر امام کے ساتھ دو یا دوسے زیادہ بالغ مرد ہوں توہ پیچھے صف میں کھڑے ہوں۔

فتوی میں کہاگیا ہے کہ اگر امام کے ساتھ ایک خاتون ہو تو وہ پچھلی صف میں کھڑی ہو، امام کے ساتھ ایک مرد اور ایک خاتون ہوں تو مرد دائیں تھوڑا پیچھے اور خاتون پچھلی صف میں کھڑی ہوں،امام کے ساتھ مرد اور خواتین ہوں تو پہلی صف میں مرد ان کے پیچھے بچے اور آخر میں خواتین کھڑی ہوں ۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -