داعش سے بھی زیادہ ظالم اور بربریت پسند کون ہے؟ امریکی پروفیسر نے ایسی بات کہہ دی کہ ملک میں ہنگامہ کھڑا کردیا

داعش سے بھی زیادہ ظالم اور بربریت پسند کون ہے؟ امریکی پروفیسر نے ایسی بات کہہ ...
داعش سے بھی زیادہ ظالم اور بربریت پسند کون ہے؟ امریکی پروفیسر نے ایسی بات کہہ دی کہ ملک میں ہنگامہ کھڑا کردیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک)اس بات میں کوئی دو رائے نہیں کہ امریکہ کے عراق، افغانستان و دیگر مسلمان ممالک پر حملوں میں لاکھوں معصوم شہری شہید ہو چکے ہیں، امریکی اتحادی افواج کے حملوں میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد داعش کے ہاتھوں مرنے والوں سے کہیں زیادہ ہے لیکن اسلام فوبیا کا شکار مغربی میڈیا اور ماہرین اس بات کو ماننے کو تیار نہیں، بلکہ وہ امریکہ کے ان مظالم کے متعلق کچھ سننا بھی پسند نہیں کرتے۔ مگر انصاف پسند اور انسانیت پرست لوگ کاہے امریکہ کے ان مظالم کے خلاف آواز اٹھاتے رہتے ہیں خواہ ان کا تعلق کسی بھی ملک، مذہب اور رنگ و نسل سے ہو۔ گزشتہ دنوں بھارتی نژاد امریکی ماہرتعلیم خاتون دیپا کمار نے امریکہ کو آئینہ دکھاتے ہوئے کہا ہے کہ ’’امریکہ نے لوگوں پر داعش سے کہیں زیادہ مظالم ڈھائے ہیں اور اب تک عراق، افغانستان اور پاکستان میں 13لاکھ معصوم شہریوں کو موت کے گھاٹ اتار چکا ہے۔‘‘

دیپا کمار کے اس ٹوئٹر پیغام پر مغربی میڈیا میں طوفان برپا ہو چکا ہے اور دہشت گردی کے نام نہاد ماہرین غصے میں تلملاتے نظر آ رہے ہیں۔ ہر طرف سے دیپا کمار کو طعن و تشنیع کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ اس کے باوجود کہ خود ایک برطانوی عدالت یہ ثابت کر چکی ہے کہ امریکہ اور برطانیہ داعش کو قائم کرنے کے ذمہ دار ہیں اور تاحال اس کی ہر طرح کی مدد کر رہے ہیں، انتہاء پسند مغربی میڈیا اور تھنک ٹینکس سے دیپا کمار کا سچائی پرمبنی بیان ہضم نہیں ہو رہا۔ دیپا کمار نے کچھ عرصہ قبل فیس بک پر اپنی ایک پوسٹ میں امریکہ کے گورے مردوں کے خواتین کے خلاف صنفی امتیاز برتنے کے حوالے سے بھی آواز اٹھائی تھی۔ واضح رہے کہ دیپا کمار نے سوشل میڈیا پر امریکہ کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہلاکتوں کے خلاف ایک مہم شروع کر رکھی ہے اور وقفے وقفے سے اس حوالے سے امریکہ کو تنقید کا نشانہ بناتی آ رہی ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -