مانگا منڈی ، طبی امداد نہ ملنے پر کرنٹ سے جھلس جانیوالا مستری جاں بحق

مانگا منڈی ، طبی امداد نہ ملنے پر کرنٹ سے جھلس جانیوالا مستری جاں بحق

  

مانگا منڈی (نمائندہ خصوصی) مانگا منڈی بجلی کا کرنٹ لگنے سے 55سالہ شخص جاں بحق ۔تفصیلات کے مطابق مستری اور 5بچوں کا باپ خادم حسین صبح9 بجے کے قریب ایک زیر تعمیر مکان میں کام کر رہا تھا کہ اچانک پانی والے پائپ کے ساتھ بجلی کی ننگی تاروں سے اس کا ہاتھ چھو گیاجس پر اسے فوری طور پر ہیلتھ سنٹر مانگا منڈی لے جایا گیا،ڈاکٹر کی عدم موجودگی اورفوری طبی امداد کی سہولیات کی عدم دستیابی کے باعث ایک گھنٹہ زندگی اور موت کی کشمکش کے بعد دم توڑ گیا۔شہریوں نے ہیلتھ سنٹروں میں ایسے واقعات پر حکومت کی جانب سے فوری طبی امداد کی سہولیات اور ڈاکٹرز کے نہ ہونے پرشدید احتجاج کیااور نعرہ بازی کی۔مظاہرین نے مستری خادم حسین کی موت کا ذمہ دار ہیلتھ سنٹر کے ڈاکٹرکو بھی ٹھہرایاکہ اس کی غیر موگودگی کے باعث مریض ہلاک ہوا ہے،مظاہرین نے نعش کو سڑک پر رکھ کر احتجاج بھی کیا اور تقریباً1گھنٹہ تک روڈ کو بندکئے رکھا۔اس دوران تھانہ مانگا منڈی کے انچارج میاں عطاء اللہ بھی موقع پر پہنچ گئے خادم حسین کے بیٹے محمد اقبال نے کہا کہ میرا والد ڈاکٹر کی لاپرواہی سے جاں بحق ہوا ہے ۔ ڈاکٹر عبدالمتین اور ذوالفقار علی نے بتایا کہ انچارج ڈاکٹر جاوید اقبال چھٹی پر ہیں ، یہ تمام واقع میرے آنے سے پہلے ہوا ہے۔ڈپٹی ڈی او ڈاکٹر اختر سعید نے عوام کے سامنے عملہ سے انکوئری شروع کر دی لواحقین اور سیاسی شخصیات کے بھی بیان کولیکر کہا کہ جو بھی اس واقعہ میں قصور وار پایا گیا اس کو سخت سزا دی جائے گی۔

مزید :

علاقائی -