قومی اداروں کی بحالی کے منصوبوں میں سیاستدانوں کو تعاون کرنا چاہیے ،سعد رفیق

قومی اداروں کی بحالی کے منصوبوں میں سیاستدانوں کو تعاون کرنا چاہیے ،سعد رفیق

  

 لاہور(خبر نگار خصوصی) سیاسی جماعتوں اور سیاستدانوں کو قومی و عوامی مفاد کے کاموں میں سیاسی تعصبات اور جماعتی مفادات سے بالاتر ہو کر باہم تعاون کرنا چاہیے ۔ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق اور تحریکِ انصاف کے رُکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عارف علوی نے پاکستان ریلویز بوائز ہائی سکول کراچی کینٹ کی بحالی اور نئے انتظامی امور کے پائلٹ پراجیکٹ کے سہ فریقی معاہدے کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کر تے ہوئے کیا۔ اس موقع پر وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ قومی اداروں کی بحالی اور عوامی مفاد کے منصوبوں میں سیاسی عناصر کو اسی طرح باہم تعاون کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ یہ پائلٹ پراجیکٹ ریلوے کے دیگر تعلیمی اداروں اور صحت کے مراکز کے لیے ایک اچھی مثال ہے۔ ریلوے کے کیرن ہسپتال لاہور کے لیے اسی طرح کے پراجیکٹ پر ان کی بعض سینئر ڈاکٹروں سے ملاقات بھی ہوئی ہے۔ انہوں نے ڈی ایس ریلوے کراچی نثار میمن اور ڈی جی ایجوکیشن ڈائریکٹر فرحان عبادت کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ سیاستدانوں کو دیانتدار افسروں کی کارکردگی پر انہیں سراہنا بھی چاہیے۔ تحریک انصاف کے سنئیر رہنما ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ ر یلویز بوائز ہائی سکول کراچی کینٹ ان کے حلقہ انتخاب میں آتا ہے لیکن وزیر ریلوے نے اس کی بحالی کے لیے ہمارے تعاون کی پیشکش کا کھلے دِل سے خیر مقدم کیا۔ ہم اسے ایک آئیڈیل سکول بنائیں گے۔ گزشتہ روز ریلوے ہیڈکوارٹر میں منعقدہ اس تقریب میں ڈائریکٹر جنرل ایجوکیشن پاکستان ریلویز ڈاکٹر فرحان عبادت، انصاف کمیونٹی ویلفیئر سوسائٹی کراچی کے زاہد اصغر اور دی سٹیزن فاؤنڈیشن کے بریگیڈیئر (ر) سہیل سلیم نے دستخط کئے۔ ریلوے کے چیف ایگزیکٹو آفیسر محمد جاوید انور، ممبر فنانس غلام مصطفی، ایڈیشنل جنرل منیجر غضنفر عباس اور انسپکٹر جنرل ریلوے پولیس منیر احمد چشتی،ڈی آئی جی ہیڈکوارٹرریلوے پولیس شارق جمال خان، ڈی آئی جی آپریشنز ریلوے پولیس جواد احمد ڈوگر اور ڈی ایس ریلوے کراچی نثار میمن سمیت اعلیٰ حکام موجود تھے۔واضح رہے کہ کراچی کینٹ میں1962 میں قائم ہونے والا سواسات ایکڑ رقبے پر مشتمل یہ سکول ایک عرصے سے ناگفتہ بہ صورتِ حال سے دوچار تھا۔ ایک ہزار سے زائد طلبہ کی گنجائش کے حامل اس سکول میں اس وقت صرف 350طلبہ زیرتعلیم ہیں۔ معاہدے کے مطابق اس سکول کو غیر منافع بخش بنیاد پر چلایا جائے گا۔ سٹیزن فونڈیشن اِسے چلائے گی۔

سعد رفیق

مزید :

صفحہ آخر -