بلدیاتی نمائندوں کو بااختیار بنانے کی منظور شدہ سمری کا نوٹیفکیشن لٹک گیا

بلدیاتی نمائندوں کو بااختیار بنانے کی منظور شدہ سمری کا نوٹیفکیشن لٹک گیا

  



لاہور(جاوید اقبال) حکومتیں بدل گئیں لیکن بلدیاتی نمائندوں کی قسمت نہ بدل سکی، ڈپٹی میئرز کو بااختیار کرنے کی شہباز شریف کابینہ کی منظور کردہ سمری کو نگران حکومت نے بھی نظر انداز کردیاہے۔تفصیلات کے مطابق شہر کے نو ڈپٹی میئرز کو بااختیار بنانیکی شہباز شریف کابینہ کی منظور کردہ سمری کو نگران حکومت نے بھی نظرانداز کر دیاہے، زرائع کا کہنا ہے کہ سابق کابینہ کی طرف سے بھجوائی گئی ڈپٹی میئرز کو بااختیار بنانے کی سمری نوٹیفکیشن کے لیے محکمہ قانون کے سرد خانے میں پڑی ہے، ڈپٹی میئرز کو اختیارات دینے کی تجاویز لوکل کمیشن کی میٹنگ منٹس جاری ہونے کے باوجود نوٹیفکیشن جاری نہیں ہوسکا،10 اپریل کو لوکل کمیشن نے تجاویز تیار کر کے سمری وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ کو ارسال کی تھی۔ لوکل کمیشن نے ڈپٹی میئرز کو اختیارات تفویض کرنے کی تجاویزتیار کیں اور شہباز شریف کابینہ نے جاتے جاتے منظوری دے دی لیکن نوٹیفکیشن جاری نہیں ہوسکا۔سابقہ پنجاب حکومت کے تشکیل کردہ لوکل کمیشن کی تجاویز کے مطابق ڈپٹی میئر زون کا انچارج ہوگا۔ 30 لاکھ تک کی ترقیاتی اسکیموں کی زون کی سطح پر ٹینڈرنگ کی جاسکے گی۔ مجوزہ منتقل کئے گئے اختیارات میں دس مرلے کے مکان کے نقشے کی منظوری، تجاوزات کا خاتمہ، ترقیاتی سکیموں کی نگرانی، ٹیکس وصولی، دکانوں کا کرایہ، غیر قانونی وال چاکنگ کی روک تھام، شہری آبادی سے مویشیوں کا انخلا، ڈینگی مہم اور میونسپل سروسز جن میں صفائی ستھرائی، نالیاں، گلیوں کی تعمیر زون کی ذمہ داری ہوگی۔مسلم لیگ ن اورنگران حکومت کے مسلسل نظر انداز کیے جانیکے بعد اب دیکھنا یہ ہے کہ نئی حکومت میں بلدیاتی نمائندوں کا مستقبل کیا ہوگا ، کیا ان کو اختیارات ملیں گے یا نہیں؟اس حوالے سے ڈپٹی میئرز کا کہنا ہے کہ بلدیاتی ادارے جمہوریت کی اکائی ہیں لیکن اختیارات نہ دے کر ان کو مذاق بنا دیا گیا ہے حکومت انھیں اختیارات دے تاکہ عام لوگوں کو ان کی دہلیز پر ریلیف مل سکے ۔

ڈپٹی میئرز

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...