پاکستان اب کسی این آر ا و کا متحمل نہیں ہو سکتا

پاکستان اب کسی این آر ا و کا متحمل نہیں ہو سکتا

  



جماعت اسلامی کے رہنما فرید احمد پراچہ نے کہا ہے کہ نیب سے سزا یافتہ سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کا علاج اگر پاکستان میں ممکن نہیں تو انہیں علاج کے لئے بیرون ملک بھیجنے میں کوئی قباحت نہیں لیکن اس کا فیصلہ اگر عدالت کرے تو زیادہ بہتر ہے ۔کیوں کہ علاج کے نام پر اگر میاں نواز شریف کسی این آر او کا سہارا لے کر بیرون ملک جاتے ہیں تو یہ انصاف کا خون ہو گا،وہ ایشو آف دی ڈے میں اظہار خیال کر رہے تھے ۔انہوں نے کہا کہ اگر اس ملک میں طاقتور وں کے خلاف احتساب کا شکنجہ کسا جا رہا ہے تو وہ کسی ایک خاندان تک نہیں رہنا چاہئے بلکہ اس کا دائرہ کار تما م بڑے مگر مچھوں تک پھیلا دینا چاہئے ۔ملک اب کسی این آر او کا متحمل نہیں ہو سکتا ۔انہوں نے کہا کہ ہمارا المیہ ہے کہ اس ملک میں کسی بھی حکمران کو یہ توفیق نہیں ہوئی کہ وہ پاکستانی عوام کے لئے صحت اور تعلیم کی سہولتیں فراہم کر سکیں اور یہی وجہ ہے کہ 35 برسوں سے برسر اقتدار حکمران کوئی ایک بھی انٹرنیشنل معیار کا اسپتال نہیں بنا سکے جہاں وہ اپنا علاج ہی کروا سکیں ۔

فرید احمد پراچہ

مزید : صفحہ اول