متحدہ رہنماؤں کیقخلاف این آر او مقدمات اوپن کرنے کی درخواست

متحدہ رہنماؤں کیقخلاف این آر او مقدمات اوپن کرنے کی درخواست

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائیکورٹ میں ایم کیو ایم رہنماوں کے خلاف این آر او کے تحت ختم کیے گئے 7 ہزار 7 سو 93 مقدمات دوبارہ ری اوپن کیلئے درخواست دائر کردی گئی۔ درخواستگزار نے دائر درخواست میں استدعا کی ہے کہ ایم کیو ایم کے رہنما فاروق ستار اور وسیم اختر سمیت دیگر رہنماں کا ملک سے فرار ہونے کا خدشہ ہے لہذا نام ای سی ایل میں شامل کیئے جائیں۔ تفصیلات کے مطابق ایم کیو ایم رہنماوں کے خلاف این آر او کے تحت ختم کیے گئے 7 ہزار 7 سو 93 مقدمات دوبارہ ری اوپن کیلئے درخواست دائر کی۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ این آر او کے تحت درج مقدمات ختم کرنے سے ایم کیوایم کے 8041 خطرناک ملزمان کو فائدہ پہنچا۔ این آر او کے تحت متحدہ بانی کے خلاف 31 قتل، 11 اغوا، 72 لاوڈ اسپیکر ایکٹ سمیت سنگین نوعیت کے مقدمات ختم کیے گئے۔ درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ سابق گورنر عشرت العباد، ڈاکٹر فاروق ستار، وسیم اختر، بابر غوری سمیت دیگر کے خلاف مقدمات بھی ختم کیے گئے۔ سپریم کورٹ نے 2009 میں این آر او کو کالعدم قرار دیا تھا۔ سپریم کورٹ کے حکم کے باوجود متحدہ رہنماں کے خلاف مقدمات کی کارروائی شروع نہیں کی گئی۔ دائر درخواست میں درخواست گزار نے موقف اپنایا کہ فاروق ستار، وسیم اختر اور دیگر کا ملک سے فرار ہونے کا خدشہ ہے۔ درخواست میں استدعا کی گئی کہ ایم کیوایم رہنماں کا نام ای سی ایل میں شامل کیا گیا جائے۔ بابر غوری سمیت دیگر کو انٹر پول کے ذریعے واپس لایا جائے۔ درخواست میں وفاقی و صوبائی حکومت ،آئی جی سندھ اور دیگر کو فریق بنایا گیا ہے۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...