ڈیرہ ڈویژن، رحیم یار خان میں 6اگست سے شروع ہونیوالی پولیو مہم کے انتظامات مکمل

ڈیرہ ڈویژن، رحیم یار خان میں 6اگست سے شروع ہونیوالی پولیو مہم کے انتظامات ...

  



ڈیرہ غازیخان‘ راجن پور‘ رحیم یار خان (نمائندگان) ڈیرہ غازی خان‘ راجن پور‘ مظفرگڑھ اور رحیم یار خان کے اضلاع میں 6(بقیہ نمبر48صفحہ12پر )

اگست کو شروع ہونیوالی تین روزہ پولیو مہم کے انتظامات کو حتمی شکل دی جارہی ہے۔ ڈیرہ غازیخان سے سٹی رپورٹر‘ نمائندہ خصوصی کے مطابق ڈیرہ غازیخان ،راجن پور اور مظفرگڑھ اضلاع میں پولیو کی خصوصی مہم 6 اگست سے شروع ہو گی جس میں ضلع ڈیرہ غازیخان کے پانچ سال تک کے چھ لاکھ 12ہزار 589بچوں کو حفاظتی قطرے پلانے کا ہدف مقرر کیاگیاہے جس کیلئے 1559ٹیموں پر مشتمل 3382 افرادی قوت کام کرے گی ۔ یہ بات ڈپٹی کمشنر ڈیرہ غازیخان علی اکبربھٹی کی زیر صدارت ضلعی انسداد پولیو کمیٹی کے اجلاس میں بتائی گئی ۔ ڈپٹی کمشنر نے کہاکہ ڈیرہ غازیخان کو بلوچستان ، خیبرپختونخواہ اور سندھ سے منسلک ہونے کی وجہ سے حساس ترین ضلع کا درجہ دیا گیا ہے اس لیے ضلع کے سرحدی مقامات پر متحرک ٹیمیں تعینات کر کے ہر بچہ کو ویکسین پلائی جائے‘ خانہ بدوش بستیوں ، خاندانوں اور ٹارگٹ بچوں کا باقاعدہ ریکارڈ مرتب کیاجائے ‘ ٹیموں کی سکیورٹی او رمانیٹرنگ کا کڑا نظام وضع کیا جائے‘ پولیو کے ساتھ ای پی آئی پر بھی توجہ دی جائے ۔ضلع کے تمام مراکز صحت میں ضروری ادویات کی وافر موجودگی ، صفائی ، ٹھنڈا پانی او ردیگر ضروری سہولیات کو یقینی بنایا جائے ۔ فرائض میں غفلت اور کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ اجلاس میں سی ای او ہیلتھ نے بریفنگ دی۔ اس موقع پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر فاروق صادق ، اسسٹنٹ کمشنرز احمد فراز اعوان ، شاہد حسین اوردیگر افسران موجو دتھے۔ راجن پور سے نامہ نگار کے مطابق 6اگست 2018سے شروع ہونے والی تین روزہ پولیو مہم کے دوران ضلع راجن پور میں 4لاکھ سے زائد بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے۔مہم کو کامیاب کرنے کے لئے تمام ادارے، تمام مکاتب فکر کے علماء کرام اور والدین اپنا اپنا کردار ادا کریں۔ والدین اپنے پانچ سال تک کی عمر کے بچوں کو قطرے ضرور پلوائیں۔ پولیو سے بچاو کی ویکسین کے قطرے نہ پلوانے والے والدین کے خلاف فوری سخت ایکشن لیا جائے گا۔ یہ باتیں ڈپٹی کمشنر اللہ ڈتہ وڑائچ نے پولیو مہم کے انتظامات کے سلسلے میں منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہیں۔انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت اور پولیو کی ٹیمیں اپنی ڈیوٹی کو قومی فریضہ سمجھ کر سر انجام دیں اور کوئی بھی بچہ پولیو سے بچاؤ کے قطرے پینے سے رہ نہ جائے۔اس موقع پر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس جلیل احمد، چیف ایگزیکٹو آفیسر صحت ڈاکٹر خلیل،چیف ایگزیکٹو آفیسر تعلیم مقبول احمد،ڈسٹرکٹ آفیسر ہیلتھ ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ،ڈسٹرکٹ آفیسرز تعلیم فیاض بزدار و فوزیہ حناء،ڈسٹرکٹ آفیسر پاپولیشن ارشاد فرید بھٹہ،منیجر صنعت زار نادیہ نواز،منیجر اوقاف آفتاب شاہ،محکمہ پولیس ،ریوینو کے افسران ،ڈبلیو ایچ او کے نمائندہ اورپرائیویٹ سکولوں کے نمائندگان بھی موجود تھے۔اس موقع پر ڈاکٹر ہاشم علی نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ یہ تین روزہ پولیو مہم چھ اگست سے شروع ہو گی۔اس میں 1119ٹیمیں کام کریں گی۔ رحیم یار خان سے بیورونیوزکے مطابق اسسٹنٹ کمشنرحرا رضوان نے پولیو کی آئندہ مہم کے انتظامات کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ انسداد پولیو کی آئندہ مہم ضلع کی ایک تحصیل صادق آباد سمیت مخصوص یونین کونسلز میں 6تا8اگست تک جاری رہے گی جبکہ مزید دو دن بھی پولیو ٹیموں کو متحرک رکھا جائے گا تاکہ کسی وجہ سے رہ جانے والے بچوں کو پولیو ویکیسن کے قطرے پلائے جا سکیں۔انہوں نے ہدایت کی کہ آئندہ پولیو مہم سے قبل تمام تر انتظامی تیاریوں کو ہر لحاظ سے مکمل کیا جائے اور سابقہ مہم کی خامیوں و کمزوریوں کا بھی ازالہ ہونا چاہیے۔ڈسٹرکٹ پولیو ریڈیکیشن کمیٹی کے اجلاس میں سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر محمد عباس، ڈبلیو ایچ او کے نمائندہ ڈاکٹر مفکر میاں، ڈاکٹر نیاز احمد، ڈاکٹر سخاوت رندھاوا، روٹری کلب سے ممتاز بیگ، محمد اویس عارف، قاضی خلیل الرحمن سمیت دیگر تعاون کرنے والے اداروں کے افسران و نمائندگان نے شرکت کی۔اسسٹنٹ کمشنر نے ہدایت کی کہ جامع حکمت عملی کے تحت پولیو مہم کے دوران ذمہ داریاں سر انجام دی جائیں تاکہ کوئی بھی پانچ سال سے کم عمر بچہ پولیو سے بچاؤ کی ویکسین سے محروم نہ رہے۔سی ای او ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر محمد عباس نے بتایا کہ بلوچستان میں پولیو کیسز آنے کے باعث ضلع کی تحصیل صادق آباد سمیت دیگر تحصیلوں کی مخصوص یونین کونسلز میں پولیو مہم چلائی جائے گی۔انہوں نے بتایا کہ ضلع میں پانچ سال سے کم عمر بچوں کی تعداد 4لاکھ72ہزار ہے جس کے لئے 2ممبران پر مشتمل919موبائل ٹیمیں، 113فکس ٹیم، ٹرانزٹ پوائنٹس پر73جبکہ مجموعی طور پر1ہزار116ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جس کی سپروائزی کے لئے 62یو سی ایم او اور 222ایریا انچارجز ہیں۔ڈبلیو ایچ او کے نمائندے ڈاکٹر مفکر میاں نے گلوبل صورتحال پر روشنی ڈالتے ہوئے بتایا کہ پاکستان میں اب تک 3کیس سامنے آئے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ پولیو کے خاتمہ کے لئے ہمیں ایک ٹیم بن کر اس قومی مہم کا انجام دینا ہو گا اور اس سلسلہ میں ضلع رحیم یار خان کی کارکردگی تسلی بخش ہے تاہم مزید بہتری کے لئے اقدامات جار ی رکھے جائیں۔

پولیو مہم

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...