ٹوپی ، فلائنگ کوچ مالکان کا کرایوں میں خود ساختہ اضافہ ، مسافر پریشان

ٹوپی ، فلائنگ کوچ مالکان کا کرایوں میں خود ساختہ اضافہ ، مسافر پریشان

  



ٹوپی (نامہ نگار)ٹوپی پشاور فلائنگ کوچ مالکان نے اپنی مرضی سے کرایہ میں خود ساختہ اضافہ کیا ، ہر سواری سے 170روپے کے بجائے 180روپے وصول کیا جا رہا ہے اعتراض کر نے پر سواری کو گاڑی سے اتاردیاجاتا ہے ایک طرف آر ٹی اے کی عدمی دلچسپی جبکہ دوسری طرف ٹریفک پولیس بھی مال بنانے کے چکر میں اپنے ذمہ داریوں کاکوئی خیال نہیں رکھتا ڈی سی اور ضلعی ٹریفک انچارج سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ عوامی حلقے تفصیل کے مطابق صوبہ بھر میں عموماً اور ضلع صوابی میں خصوصاً اندھیر نگری اور چوپٹ راج ہے ہر کسی نے قانون سے گھر کی لونڈی بنا رکھی ہے ٹوپی سے پشاو ر جانے والی فلائنگ کوچ مالکان نے اپنے مرضی سے کرایہ میں خود ساختہ اضافہ کیا ہے اور ہر سواری سے 170روپے کے بجائے 180روپے وصول کیا جا رہاہے اعتراض کر نے پر سواری کو گاڑی سے اتارا جاتا ہے نہ تو آرٹی اے کی طرف سے ٹرانسپورت پر چیکنگ کاکوئی انتظام ہے اور نہ ہی ٹریفک اہلکار اوورلوڈ ، زاید کرایہ، تیز رفتاری ، کالی شیشوں اور نو عمر بچوں کی ڈرائیونگ پر کوئی ایکشن لیتا ہے وہ سار ا دن اس تاک میں رہتے ہیں کہ کب کوئی اجنبی گاڑی شہر میں داخل ہوتا ہے اجنبی گاڑی کو دور سے دیکھ کر شکاری کی طرح اس کے پیچھے دوڑ لگاتے ہیں اکثر اوقات قانون کے محافظین گاڑی کو روڈ کے بیچھ میں روک کر تین ، چار ٹی اوز کو چلان بک کے ساتھ گاڑی کو دونوں طرف سے گیر لیتے ہیں جس سے ٹریفک کی روانی متاثر ہونے کے ساتھ ساتھ عوام کو بھی چلنے پھر نے میں شدید دقت کا سامنا کر نا پڑھتا ہے علاقہ کے سماجی حلقوں نے ڈی سی او اور ضلعی ٹریفک انچارج سے اس پر فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...