اگر سزا دینے سے عدالت کا وقار بلند ہوا ہے تو مجھے یہ سزا قبول ہے:مسلم لیگ (ن)کے رہنما طلال چودھر ی

اگر سزا دینے سے عدالت کا وقار بلند ہوا ہے تو مجھے یہ سزا قبول ہے:مسلم لیگ (ن)کے ...
اگر سزا دینے سے عدالت کا وقار بلند ہوا ہے تو مجھے یہ سزا قبول ہے:مسلم لیگ (ن)کے رہنما طلال چودھر ی

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ (ن)کے رہنما طلال چودھر ی کا کہنا ہے کہ توہین عدالت کیس کئی ماہ چلتارہااور اگر اس کیس میں مجھے سزا دینے سے عدالت کا وقار بلند ہوا ہے تو مجھے یہ سزا قبول ہے ۔

توہین عدالت کیس میں عدالت برخاست ہونے تک کی سزا پوری کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن)کے رہنما طلال چودھر ی کا کہنا تھا کہ میرے خلاف توہین عدالت کے کیس اور مخالفین کی مہم سے میراالیکشن متاثرہوا لیکن اس کے باوجودووٹ ملے،میرے خلاف توہین عدالت کیس کئی ماہ چلتارہااور اگر اس کیس میں مجھے سزا دینے سے عدالت کا وقار بلند ہوا ہے تو مجھے یہ سزا قبول ہے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ میرا تعلق اس جماعت ہے جس کے قائد کو بھی سزا سنائی گئی،جب جدوجہد کی جاتی ہے تو ہر بات ذہن میں رکھی جاتی ہے ،انتخابات کے دوران بھی یہ کیس چلتا رہا اوراس لٹکتی تلوار سے میرے حلقے کے لوگ کنفیوزتھے جبکہ میرے مخالفین میرے خلاف مہم چلاتے رہے ۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے ن لیگ کے رہنما طلال چودھری کو توہین عدالت کیس میں نااہل قرار دے دیاتھا اور انہیں عدالت برخاست ہونے تک قید اور ایک لاکھ روپے جرمانے کی بھی سزا سنائی گئی تھی  اور وہ سزاکے طور پر عدالت میں 2گھنٹے 5منٹ تک رہے ۔

مزید : سیاست /علاقائی /اسلام آباد


loading...