ایف اے ٹی ایف ایک نیا ہتھیار، پاکستان اس کے کہنے پر یہ کام کررہا ہے،سینیٹر مشاہدحسین کھل کر بول اٹھے

ایف اے ٹی ایف ایک نیا ہتھیار، پاکستان اس کے کہنے پر یہ کام کررہا ہے،سینیٹر ...
ایف اے ٹی ایف ایک نیا ہتھیار، پاکستان اس کے کہنے پر یہ کام کررہا ہے،سینیٹر مشاہدحسین کھل کر بول اٹھے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سینیٹر مشاہد حسین سید  ایف اے ٹی ایف کی شرائط پر کھل کر بول اٹھے، کہتے ہیں یہ ایک نیا ہتھیار ہے۔

انہوں نے کہاپاکستان منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی اعانت روکنے جیسے اقدامات رونا ضروری ہے، سینیٹر نے کہا فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے پاکستان یہ کام کر رہا ہے لیکن حقیقتاً منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی اعانت ملکی مفاد میں نہیں ہے۔

نجی ٹی وی چینل "ڈان نیوز" کے مطابق سینیٹر مشاہد حسین سید  نے سینٹر فار پاکستان اینڈ گلف سٹڈیز کے زیر اہتمام ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایف اے ٹی ایف ایک نیا ہتھیار ہے جس میں ممالک پر دباؤ ڈالا جاتا ہے کہ وہ ہدایات پر عمل کریں، حال ہی میں متحدہ عرب امارات کو مالی اعانت کے معاملات پر متنبہ کیا گیا ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ ہمیں اپنا گھر خود صاف کرنا چاہیے۔انہوں نے کہاکہ ایف اےٹی ایف ہمیں بلیک لسٹ میں نہیں ڈالےگابلکہ ہم پردباؤ بڑھاتے رہیں گے۔انہوں نےکہاکہ آج پاکستان کوجو مسائل درپیش ہیں،وہ افغان جہادکےبعد پیداہونے والی صورتحال کا نتیجہ ہیں، ایف اے ٹی ایف نے ہمیں اسے صاف کرنے کا موقع فراہم کیا ہے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -