سعودی عرب کے غار سے انسانوں اور جانوروں کی ہزاروں سال پرانی ہڈیاں دریافت 

سعودی عرب کے غار سے انسانوں اور جانوروں کی ہزاروں سال پرانی ہڈیاں دریافت 
سعودی عرب کے غار سے انسانوں اور جانوروں کی ہزاروں سال پرانی ہڈیاں دریافت 

  

ریاض ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) سعودی عرب کے شمال مغرب کے علاقے میں ایک غار سے سائنسدانوں کو انسانوں اور جانوروں کی ہزاروں ہڈیاں ملی ہیں جو گزشتہ سات ہزار سال کے درمیان جمع کی گئی ہیں ۔

العربیہ کے مطابق سائنس دانوں نے شائع شدہ مطالع میں لکھا کہ یہ ہڈیاں دھاری دار لگڑ بگڑوں نے ام جرسان میں واقع ڈیڑھ کلو میٹر طویل سرنگ میں ہزاروں سال میں جمع کی ہیں ، ان ہڈیوں کو بڑی خوبصورتی سے محفوظ کیا گیا ہے ۔ یہ سرنگ سعودی مملکت میں حرات کی بارلاوا فیلڈ میں واقع ہے ۔

ملنے والی ہڈیوں میں گھوڑے ، چوہوں ، اونٹوں اور انسانوں کی ہڈیاں شامل ہیں ۔ سائنسدان سٹیوی سٹیوارٹ نے اپنے ٹویٹر پر لکھا کہ ہزاروں سال میں ہڈیوں کے جمع ہونے سے علم ہوتا ہے کہ لاوا ٹیوب ہڈیوں کے تحفظ کیلئے بہترین ماحول فراہم کرتی ہے ۔

سٹیوارٹ نے لکھا کہ ایک ایسے خطے میں جہاں ہڈیوں کا تحفظ ناقص ہے ، ام جرسان کی طرح کی جگہیں تحقیق کیلئے دلچسپ موضوع ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس مطالعہ کی مثال تو برفانی تودے کی نوک کی طرح ہے ، یعنی ابھی اور بھی بہت کچھ ہے جو نظروں سے پوشیدہ ہے ۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -