ملا ہیبت اللہ کابل کی گلیوں میں کھلے عام گھوم کر دکھائے ، اشرف غنی کا طالبان سربراہ کو کھلا چیلنج

ملا ہیبت اللہ کابل کی گلیوں میں کھلے عام گھوم کر دکھائے ، اشرف غنی کا طالبان ...
ملا ہیبت اللہ کابل کی گلیوں میں کھلے عام گھوم کر دکھائے ، اشرف غنی کا طالبان سربراہ کو کھلا چیلنج

  

کابل ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) افغانستان کے صدر اشرف غنی نے طالبان سربراہ ملا ہیبت اللہ کو کھلا چیلنج دےد یا  اور کہا کہ ملا ہیبت اللہ  کا علم بھی نہیں وہ زندہ ہے یا نہیں ، اگر وہ زندہ ہے تو آئے  کابل ، ہرات ، مزار کی گلیوں میں گھوم کر دکھائے ۔

بی بی سی اردو کے مطابق اپنے خطاب میں افغان صدر نے  طالبان پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے صرف ایک آدمی  کی وجہ سے پورے افغانستان کو جنگ میں دھکیلا ، انہوں نے القاعدہ نیٹ ورکر کے سربراہ اسامہ بن لادن کا نام لیتے ہوئے کہا کہ کیوں ایک آدمی کی خاطر پورے افغانستان کو برباد کیا گیا ، ایک آدمی اہم تھا یا اڑھائی کروڑ افغانی ؟۔

اشرف غنی نے کہا کہ اگر آپ افغان ہیں تو آ۴یں ملک کی تعمیر میں کسی نتیجے پر پہنچیں ، اگر طالبان کو عوام کا احترام ہے اور انتخابات میں حصہ لینا چاہیں تو وہ چھ ماہ یا ایک سال میں نئے انتخابات کا اعلان کرسکتے ہیں مگر افغانستان میں خونریزی کی اجازت نہیں دیں گے اور افغانوں کے ایک دوسرے کو مارنے کی کوئی اسلامی وجہ نہیں ہے۔

افغان صدر نے طالبان پر قدرتی معدنیات کی سمگلنگ کا بھی الزام عائد کیا ۔

دوسری جانب صدر  اشرف غنی کے بیان پر طالبان نے رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ اشرف غنی کا بیان سب بکواس تھا ،  وہ اپنی مشکل صورتحال پر قابو پانا چاہتے ہیں ۔ اشرف غنی کا وقت اب ختم ہو چکا ہے ، الزامات اور جھوٹی خبروں سے انہیں مزید وقت نہیں ملے گا۔ 

مزید :

بین الاقوامی -