حرےت چےرمےن علی گےلانی کی نظر بندی ختم کر دی گئی

حرےت چےرمےن علی گےلانی کی نظر بندی ختم کر دی گئی

سری نگر ( کے پی ائی) کل جماعتی حرےت کانفرنس گ کے چےرمےن علی گےلانی کی نظر بندی ختم کر دی گئی ۔ حرےت ترجمان ایاز اکبر کے مطابق گیلانی اگرچہ جمعہ کو مکمل طور اپنے گھر میں نظربند رکھے گئے تھے اور وہ اس دن نماز پڑھنے سے بھی محروم کردئے گئے تھے، البتہ جمعہ کی رات11:00بجے پولیس پہرہ ہٹا دیا گیا۔ ترجمان کے مطابق 30نومبر سنیچر صبح صدر دفاتر پر منعقد ایک معمول کی میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا کہ کولگام اور ترال کے جلسے بالترتیب اول اور 4دسمبر کو مقررہ وقت پر منعقد ہوں گے اور ان کی تاریخوں میں کسی قسم کی تبدیلی نہیں لائی جائے گی۔ بیان میں کہا گیا کہ 6دسمبر جمعہ کو گیلانی بانڈی پورہ میں بلائے گئے عوامی جلسے میں تقریر کریں گے، جبکہ 8دسمبر اتوار کو سرینگر کی میونسپل پارک میں ایک تاریخی اور یادگاری جلسہ منعقد ہوگا اور اس میں ریاست کے تمام ا ضلاع سے لوگ شرکت کریں گے۔ ترجمان نے اس بات کو دہرایا کہ سرینگر کے مجوزہ جلسے میں حریت چیئرمین تمام اہم سیاسی مسائل پر روشنی ڈالیں گے اور عوام کو ان چیلنجوں سے باخر کیا جائے گا، جو تحریکِ آزادی کشمیر کو درپیش ہیں۔

ترجمان کے مطابق متوقع طور اس جلسے میں ایک قرارداد بھی عوام کی تائید سے پاس کرائی جائے گی، جو تاریخی اہمیت کی حامل ہوگی اور جس میں آئندہ کی حکمت عملی کے حوالے سے ایک نقش راہ لوگوں کے سامنے رکھا جائے گا، یہ جلسہ ان لوگوں کے لےے بھی ایک عملی جواب ہوگا، جو تحریک آزادی سے متعلق غلط فہمیاں پیدا کرنے کی کوششیں کررہے ہیں اور جن کا خیال ہے کہ کشمیری عوام موجودہ جدوجہد سے اکتا گئے ہیں۔ بیان کے مطابق تحریک حریت اس جلسے کی تیاریوں میں ہم تن جٹ گئی ہے اور اس سلسلے میں تمام یونٹوں اور شعبہ جات کو متحرک کیا گیا ہے۔ تحریک حریت اس بات کو ہر قیمت پر یقینی بنانا چاہتی ہے کہ سرینگر کا مجوزہ جلسہ ڈسپلن اور نظم وضبط کی ایک مثال ہو اور اس میں اس وقار اور شان کی نمائش ہو، جو اسلام پسندوں اور آزادی پسندوں کے شایان شان ہوتا ہے۔#

مزید : عالمی منظر