حملہ کیا توغزہ کوصہیونی فوج کا قبرستان بنا دیں گے‘ حماس

حملہ کیا توغزہ کوصہیونی فوج کا قبرستان بنا دیں گے‘ حماس

 غزہ (این این آئی)حماس کے سیاسی شعبے کے سینئر رکن ڈاکٹر موسی ابو مرزوق نے اسرائیل کی جانب سے محصور فلسطینی شہرغزہ کی پٹی پرحملے کی دھمکیوں کو سنجیدہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مجاہدین دشمن کو دانت شکن جواب دینے کےلئے تیار ہیں ¾حملے کی حماقت کی گئی توغزہ کو دشمن فوج کا قبرستان بنا دیں گے۔ مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق قاہرہ میں اپنے ایک بیان میں حماس رہنما نے کہا کہ غزہ پرحملہ ماضی کی جنگوں کی طرح نہیں بلکہ اس کا منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔ اسرائیل کو اپنے فوجیوں کی لاشی اٹھانے اور شرمندگی کے سوا کچھ نہیں ملے گا۔ڈاکٹر ابومرزوق نے کہا کہ غزہ میں لاکھوں مرد مجاھد فتح یا شہادت پربیعت کر رکھی ہے۔ اسرائیل یہ نہ سمجھے کہ غزہ پرحملہ کرکے وہ فلسطینیوں کو ترنوالہ بنا لے گا۔ مجاہدین فتح یا شہادت تک جنگ جاری رکھیں گے۔انہوں نے کہا کہ صہیونی ریاست کا طاقت کا گھمنڈ اور بالادستی کا خواب خاک میں ملادیں گے۔ مجاھدین ماضی کی نسبت زیادہ اور مضبوط دفاعی صلاحیت رکھتے ہیں۔ صہیونی ریاست یہ بات بھول جائے کہ وہ فوج کے ذریعے غزہ کی پٹی پردوبارہ قبضہ کرلے گی۔ ہم صہیونی دشمن کی جانب سے کسی بھی جارحیت کے انتظار میں ہیں۔ غزہ میں فوج داخل ہوئی تو اس کے قبرستان بھی وہیں بنیں گے۔

خیال رہے کہ حال ہی میں اسرائیلی میڈیا کی جانب سے بتایا گیا تھا کہ فوج نے غزہ کی پٹی پرقبضے کے تناظرمیں جنگی مشقیں کی ہیں۔ یہ جنگی مشقیں ایک ایسے وقت میں ہوئی ہیں جب صہیونی حکومت کی جانب سے متعدد مرتبہ غزہ کی پٹی پرقبضے کی دھمکیاں سامنے آچکی ہیں۔حماس رہ نما ڈاکٹر موسی ابو مرزوق کا کہنا تھا کہ غزہ کی پٹی پرفوج کشی کی دھمکیاں نئی نہیں ہیں۔ اس طرح کی دھمکیوں کا مقصد عالمی رائے عامہ کو ہموار کرنا اور عالمی برادری کا رد عمل چیک کرنا ہوتا ہے۔ تاہم اس کے باجود حماس اور تمام مزاحمتی تنظیمیں دشمن کا ہرسطح پر پوری جرات سے مقابلہ کرنے کو تیار ہیں۔

مزید : عالمی منظر