یواے ای توانائی کی کھپت کا 25 فیصد جوہری توانائی سے پوراکریگا

یواے ای توانائی کی کھپت کا 25 فیصد جوہری توانائی سے پوراکریگا

ابوظہبی (اے پی اے) متحدہ عرب امارات کے وزیر توانائی سہیل محمد فراج المزروئی نے کہا ہے کہ اس کا ملک توانائی کی کھپت کا 25 فیصد جوہری توانائی سے پورا کرے گا اور اس مقصد کیلئے 4 جوہری پاور پلانٹ 2020ءتک بجلی کی پیداوار شروع کردیں گے۔ غیر ملکی صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ براکا میں پہلا جوہری پلانٹ ، جنوبی کورین ٹیکنالوجی کے تعاون سے تعمیر کیا جارہا ہے اور یہ 2017ءتک چالو ہوجائے گا جبکہ اس قسم کے تین دیگر پاور پلانٹس بالترتیب 2019, 2018 اور 2020ءمیں کام شروع کردیں گے۔ انہوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کے جوہری پاور پلانٹ مکمل طور پر شفاف اور یہ جوہری توانائی کے عالمی ادارے کے تحت کام کریںگے۔ انہوں نے کہا کہ 20 بلین ڈالر کے پراجیکٹ کا ٹھیکہ دنیا کی تیسری بڑی انرجی کمپنی کورین الیکٹرک پاور کارپوریشن کو دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت جوہری ریکٹرز کیلئے ایندھن کی سپلائی کیلئے 9 معاہدوں پربھی کام کر رہی ہے اور اس کے عالمی شراکت دار ایندھن کی ری سائیکلنگ میں مدد کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ توقع ہے کہ یو اے ای 2020ءتک بجلی کی 5 سے 7 فیصد کھپت متبادل توانائی سے پوار کرنے کے قابل ہو جائے گا۔ انہوںنے کہا کہ حکومت شمسی توانائی اور ہوا سے بھی بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں پر تیزی سے کام کر رہی

مزید : کامرس