کراچی سے گوادرتک سونامی کا خدشہ ، پاکستان اور یورپ کے ماہرین کی تحقیق میں انکشاف

کراچی سے گوادرتک سونامی کا خدشہ ، پاکستان اور یورپ کے ماہرین کی تحقیق میں ...
کراچی سے گوادرتک سونامی کا خدشہ ، پاکستان اور یورپ کے ماہرین کی تحقیق میں انکشاف

  

اسلام آباد،کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان اور یورپ کے ماہرین نے پاکستان میں آنیوالے یکے بعد دیگرے زلزلوں پر ہونیوالی تحقیق میں انکشاف کیاہے کہ کراچی سے گوادر تک سونامی آسکتی ہے جس کی لہریں 20سے 30فٹ تک اونچی ہوسکتی ہیں ۔ ماہرین ارضیات کاکہناہے کہ تین سال میں تین متواتر زلزلے بڑے سونامی کا پیش خیمہ ہیں ، ساحلی علاقوں میں زیرزمین بڑی تیزی کے ساتھ تبدیلیاں نمودار ہورہی ہیں،1945ءکا سونامی دوبارہ آنے کا خدشہ ہے ۔ماہر ارضیات پروفیسردین محمد کاکڑ نے بتایاکہ کراچی ، پسنی ، گوادر اور اوماڑہ سے سونامی ٹکراسکتاہے،بلوچستان میں ایک سال کے دوران تین زلزلے آئے جن کی وجہ سے سمندر کے اندرجزیرے بھی بن گئے ۔چیف میٹرولوجسٹ توصیف عالم نے کہاکہ کراچی میں 2008ءمیں سونامی وارننگ سسٹم قائم کیاگیاہے اور کام جاری ہے ۔ دین محمد کاکڑکاکہناتھاکہ جاپان اور امریکہ جیسے ممالک بھی سونامی کاحتمی وقت نہیں بتاسکتے ، سونامی جہاں ایک بار آتی ہے ، وہاں دوبار ہ ضرور آتی ہے، بلوچستان کے ساحل پر دس سے پنڈہ فٹ اونچی لہریں ہوسکتی ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس