مری معاہدے کی خلاف ورزی پر مسلم لیگ ن بلوچستان میں بغاوت کاخدشہ

مری معاہدے کی خلاف ورزی پر مسلم لیگ ن بلوچستان میں بغاوت کاخدشہ
مری معاہدے کی خلاف ورزی پر مسلم لیگ ن بلوچستان میں بغاوت کاخدشہ

  

اسلام آباد(آن لائن)مری معاہدے پر عملدرآمد نہ ہونے کی صورت میں مسلم لیگ (ن) بلوچستان میں بغاوت کے قوی امکانات پیدا ہو گئے ،مسلم لیگ (ن)،پشتونخواملی عوامی پارٹی اور نیشنل پارٹی کے مابین ہونیوالے معاہدے بارے (ن)لیگ کی سینئر قیادت کو شدید مشکلات کا سامنا ہے جبکہ حکومت وزیراعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک کی تبدیلی کو تیار نہیں۔ ذرائع کے مطابق 11مئی2013ءکے عام انتخابات کے بعد بلوچستان میں حکومت سازی بارے مسلم لیگ (ن)، نیشنل پارٹی اور پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے درمیان مری کے مقام پر ایک معاہدہ طے پایا تھا جس کے مطابق اڑھائی سال بعد صوبے کا اقتدار نیشنل پارٹی سے لیکر مسلم لیگ (ن) کے حوالے کیا جانا تھا جبکہ حکومت موجودہ وزیراعلی بلوچستان کو بدلنے کے لئے تیار نہیں۔ذرائع نے بتایا کہ مسلم لیگ (ن) کے ارکان بلوچستان اسمبلی نے بغاوت کا عندیہ بھی دیدیا ہے جس سے پارٹی میں بغاوت کا خدشہ پیدا ہوگیا، ان ارکان کے مطابق گزشتہ ڈھائی سال سے مسلم لیگ (ن) کے ارکان مسلسل نظر انداز ہوتے رہے جس سے ان کے حلقوں میں بے شمار مسائل نے جنم لیا ہے اور وہ عوام کی حمایت حاصل کرنے میں ناکام ہیں۔

مزید :

اسلام آباد -