پاکستان میں ایڈز کے مریضوں کی تعداد ایک لاکھ سے زائد ہے،ڈاکٹر فیصل سلطان

پاکستان میں ایڈز کے مریضوں کی تعداد ایک لاکھ سے زائد ہے،ڈاکٹر فیصل سلطان
پاکستان میں ایڈز کے مریضوں کی تعداد ایک لاکھ سے زائد ہے،ڈاکٹر فیصل سلطان

  

لاہور(پ ر)ایڈز ایک خطر ناک متعدی بیماری ہے جس میں مبتلا مریض میں قوت مدافعت ختم ہوجاتی یہ مرض انتقال خون یا جنسی تعلق کی بدولت پھیلتا ہے آجکل سائنسی ترقی کے دور میں اس مرض کو اگرچہ کافی حد تک کنٹرول کر لیا گیا ہے مگر اس کے مریض دنیا کے تقریباًتمام ممالک میں موجود ہیں ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر فیصل سلطان ، ماہرمتعدی امراض ، شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال نے میڈیا سے "ایڈز کے عالمی دن "کے موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ اگرچہ آج کل اس مرض کی ادویات نسبتاً سستی دستیاب ہیں پھر بھی اس کی تشخیص سے متعلقہ ٹیسٹ اور اس کا علاج کافی مہنگا ہے۔انہوں نے مزید بتایا کہ پنجاب ایڈز کنٹرول کسی حدتک ادویات اور ٹیسٹ مفت فراہم کر رہا ہے اور علاج کیلئے سنٹرز بھی بنائے گئے ہیں۔پاکستان میں ایڈز کے مریضوں کی تعدادبارے ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ یونائیٹڈ نیشنز کے مطابق پاکستان میں ایڈز میں مبتلا مریضوں کی تعداد تقریباً ایک لاکھ سے سوا لاکھ کے درمیان ہے۔پنجاب میں ایک اندازے کے مطابق یہ تعداد پچاس ہزار کے قریب ہے جبکہ پنجاب میں رپورٹ ہونیوالے مریضوں کی تعداد 3000سے زائد ہے۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ یہ درست ہے کہ متوسط طبقے سے تعلق رکھنے والے لوگوں میں اس بیماری کی شرح زیادہ دیکھی گئی ہے ، اس کی ایک وجہ یہ ہوسکتی ہے کہ ایسے لوگوں میں اس بیماری بارے اآگاہی کم ہوتی ہے اور پھر علاج اور تشخیص کیلئے وسائل بھی نہ ہونے کے برابر ہوتے ہیں۔ڈاکٹر فیصل نے اس مرض کے متعلق حفاظتی تدابیر پر زور دیا اور کہا کہ استعمال شدہ سرنج ، جنسی تعلق اور سکریننگ کے بغیر انتقال خون سے ہر گز بچنا چاہیے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -